• ☚ شہباز پور پل پرروکنے کی سزا‘گاڑی سوارو ں نے سیکیورٹی گارڈ کچل ڈالا
  • ☚ چوہدری محمد ارشد چیچیاں کی اہلیہ کے ایصال ثواب کیلئے ختم قل
  • ☚ حاجی محمد بشیر کو حج بیت اللہ کی سعادت پر اہم شخصیات کی مبارکباد
  • ☚ بشیر احمد کو حج کی سعادت پر اہم شخصیات کی مبارکبادیں
  • ☚ گجرات:رجسٹریشن نہ کرانے پر مالک مکان کرایہ دار سمیت گرفتار
  • ☚ موجوکی میں سسرالیوں کا بہو پر بدترین تشدد‘ ہڈی پسلی ایک کردی
  • ☚ پاکستانی قومی بھار تی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیگی:مہر فاروق
  • ☚ لالہ موسی میں گرانفروشی کا بازار گرم‘پرائس کنٹرول کمیٹیاں غیر فعال
  • ☚ مجلس قادریہ حضرت دیوان حضوری الکویت کے زیر اہتمام روحانی محفل
  • ☚ امام حسین کی شہا دت دنیا کے لیے مشعل راہ ہے:چوہدری عظمت
  • ☚ متحدہ اپوزیشن ، ن لیگ کا پی پی قیادت سے رابطہ ،ذرائع
  • ☚ فرانسیسی جنگی طیاروں کے سودے میں اربوں کی کرپشن، مودی حکومت خطرے میں
  • ☚ نواز شریف لاہور کے بعد جاتی امرا پہنچ گئے
  • ☚ سوئی گیس مہنگی، LPG سستی، قیمت میں 10 سے 143 فیصد اضافہ، LPG کے تمام ٹیکس ختم، صرف 10 فیصد GST لگے گا، بلوچستان،سندھ کیلئے CNG بھی مہنگی
  • ☚ ایشیا کپ: پاکستان فیورٹ ہے بھارت نہیں، سنجے منجریکر
  • ☚ وزیراعظم ہائوس کی 8 بھینسوں کی تفصیل سامنے آگئی
  • ☚ شریف خاندان کے پیرول میں توسیع کا نوٹیفیکیشن جاری
  • ☚ ’شریف خاندان کو مفروضے پر دی گئی سزا برقرار نہیں رہ سکتی‘
  • ☚ جمہوریت مضبوط،مزیدمستحکم ہوگی،نئے صدر کی حلف برداری جمہوری عمل کے تسلسل کیلئے اہم ہے، آرمی چیف
  • ☚ جمہوریت مضبوط،مزیدمستحکم ہوگی،نئے صدر کی حلف برداری جمہوری عمل کے تسلسل کیلئے اہم ہے، آرمی چیف
  • ☚ برطانوی نیو کلیئر ڈیٹرنٹ انفراسٹرکچر مقصد کیلئے فٹ نہیں، ایم پیز
  • ☚ برطانیہ کا بریگزٹ پلان مسترد،تھریسامے کو ہزیمت کاسامنا
  • ☚ برطانوی سیاست میں ساجدجاویدکے عروج پر برٹش ایشیائی باشندوں کاجشن
  • ☚ برطانیہ پاکستان کی سیاسی حساسیت سے واقف
  • ☚ بریگزٹ کے بعد انتقام کا خدشہ، ای یو مائیگرنٹس کو برطانوی ویزے دینے پر غور
  • ☚ سکھوں کا علیحدہ مملکت کیلئے خالصتان ایڈمنسٹریشن کا تاریخی اعلان
  • ☚ لندن: منی لانڈرنگ کے الزام میں پاکستانی سیاسی شخصیت اہلیہ سمیت گرفتار
  • ☚ بریگزٹ: یورپی یونین تھریسامے کو اپنی تجاویز پر قائل کرنے میں ناکام
  • ☚ ایم پیز کو میرے پلان یا پھر کوئی ڈیل نہیں کا انتخاب کرنا ہوگا، تھریسا مے
  • ☚ برطانیہ: منی لانڈرنگ کے الزام میں گرفتار پاکستانی کا نام سامنےآگیا
  • ☚ ایسی فلم میں کام نہیں کروں گا جسے دیکھ کر بیٹی شرمندہ ہوجائے، ابھیشیک بچن
  • ☚ دپیکا رنویر کی شادی تاخیر کا شکار
  • ☚ شلپا شیٹھی کو سڈنی ایئرپورٹ پر نسل پرستی کا سامنا
  • ☚ شعیب ملک کی تعریف کے دوران غلطی پر ماورا مذاق کا نشانہ بن گئیں
  • ☚ ایشیا کپ ،آج پاکستان روایتی حریف بھارت کو ہرانے کے لئے پرعزم
  • ☚ فخر زمان نے کس طرح خود اپنی وکٹ ضائع کی ؟
  • ☚ پاکستان کو 9 وکٹ سے شکست،بھارت فائنل میں
  • ☚ ایشیاکپ کے شیڈول میں توازن نہیں، پی سی بی
  • ☚ روتے ہوئےافغان بولر آفتاب کو شعیب ملک نےگلے لگا لیا
  • ☚ شعیب ملک نےسینئر ہونےکا حق ادا کردیا، سرفرازاحمد
  • آج کا اخبار

    نواز شریف کو پاکستانی سیاست سے کوئی نہیں نکال سکتا،یہ باب بند ہوگیا،پاکستانی کمیونٹی

    Published: 09-07-2018

    Cinque Terre

    لوٹن:برطانیہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی شخصیات نے احتساب عدالت کی جانب سے سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد محمد نوازشریف کو دی گئی سزا پر مختلف آرا کا اظہار کیا ہے۔ لوٹن میں مقیم پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی سے جنگ سروے کے دوران جب میاں نوازشریف کو سزا ہوجانے کے بعد پاکستان کی سیاست میں نوازشریف کے کردار کے بارے میں پوچھا گیا تو ملا جلا رحجان پایا گیا۔ راجہ زاروب خان پاکستان مسلم لیگ (ن) لوٹن کے صدر نے اس فیصلے کے پاکستان کی سیاست پر انتہائی منفی اثرات پڑنے کا خدشہ ظاہر کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کو وزارت، صدارت یا کسی عہدے سے ہٹانے سے فرق نہیں پڑتا۔ میاں نواز شریف عوام کے دلوں میں رہتے ہیں اس لئے انہیں پاکستان کی سیاست سے نہیں نکالا جاسکتا اور ایسا سوچنے والے خوابوں کی دنیا میں رہتے ہیں۔ میاں نواز شریف اور پاکستان ایک دوسرے کے لئے لازم و ملزوم ہیں پاکستان تحریک انصاف لوٹن کے حافظ طارق کے مطابق میاں نواز شریف اور ان کے خاندان نے کرپشن کی اور اس کی سزاعدالتوں نے دی اب ن لیگ یا نواز شریف کا مقدر صرف جیل ہے۔ اپنی ناجائز کمائی کو بچانے کے لئے میاں نواز شریف سیاست کی آڑ میں چھپ رہے ہیں۔عام انتخابات میں عوام واضح کردیں گے کہ کون پاکستان کا ہمدرد ہے اور کس کو صرف اپنی دولت سے غرض ہے۔ میاں نواز شریف اور ان کی (ن) لیگ 25جولائی کے بعد ڈھونڈنے کو نہیں ملے گی۔ عبدالغفور میاں نواز شریف کو سزا دینا ایک سازش قرار دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف اگر جیل جاتے ہیں تو اس سے ان کے چاہنے والوں میں اضافہ ہوگا اور یقیناً مسلم لیگ (ن) کو ہمدردی کا ووٹ بھی ملے گا۔ یوں میاں نواز شریف نیلسن منڈیلا کا کردار ادا کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ میاں نواز شریف اس سے قبل قید اور جیل کو دیکھ چکے ہیں۔صفدر بخاری اس فیصلے کو تاریخی کہتے ہیں کہ پاکستان میں اس سے قبل سزائیں صرف کمزوروں کے لئے تھیں اس فیصلے سے پاکستان میں عدالتیں آزاد ہوگئی ہیں۔ طاقتور اور کمزور ہر ایک کے لئے ایک جیسا قانون ہو تو معاشرہ ترقی کرتا ہے۔ میاں نواز شریف اپنی جائیدادوں کی تفصیل دینے میں ناکامرہے تو انہیں سزا دی گئی۔اب پاکستان ایک نئی سمت کی طرف بڑھے گا۔ میاں نواز شریف کے جیل جانے سے طاقتور اور کرپٹ عناصر کو ایک سخت پیغام گیا ہے جس سے اب کوئی بھی کرپشن کرنے سے پہلے سوچے گا۔ میاں نواز شریف جس طرح نیلسن منڈیلا یا بھٹو بننے کا خواب دیکھ رہے ہیں ایسا کچھ نہیں ہونے والا بلکہ ن لیگ کا وجود خطرے میں لگ رہا ہے۔ عمران یوسف کا کہنا ہے کہ میاں نواز شریف نے تین بار وزارت عظمیٰ کا عہدے پاس رکھنے کے باوجود عوام کے لئے کچھ ایسا نہیں کیا جو انہیں لوگ یاد رکھیں۔ انہوں نے صرف اپنے بنک بیلنس کا خیال رکھا اور وہی اب ان کی رسوائی کا سبب بن رہا ہے۔ میاں نواز شریف کا نہ صرف سیاست سے باب ختم ہوچکا ہے بلکہ نشان عبرت بن جائے گا۔ اب عوام الیکشن میں اپنے درست نمائندے کا چناؤ کریں تاکہ پاکستان کی ترقی کا درست سمت میں تعین ہوسکے۔ بیڈ فورڈ سے کونسلر محمد نواز نے کہا کہ جس طرح نواز شریف کی فیملی کے خلاف فیصلہ آیا ہے انہیں اب واپس سیاست میں نہیں آنا چاہئے۔ وہ لوگ جو پہلے حکومت کر چکے ہیں اور آزمائے جا چکے ہیں ان کی جگہ اب وہ لوگ جن کا مقصد خالصتاً پاکستان اور عوام کی خدمت کرناہو ان کو موقع دیا جانا چاہئے۔ انھوں نے مزید کہا کہ خواہ وہ عمران خان ہو ںیا جو کوئی بھی ہو پاکستان اور پاکستان کے عوام کے مفاد میں کام کرے ملک کو گرداب سے نکال کر کامیابی کی طرف لے جائے۔ راجہ امجد فاروق ایڈووکیٹ نے کہا کہ نواز شریف اوران کی فیملی کے خلاف اس قسم کے فیصلے سے وہ نہیں سمجھتے کہ انکی سیاست ختم ہو گئی ہے۔ ابھی ایک فیصلہ آنا باقی ہے وہ ہے عوام کا فیصلہ ہے۔ پاکستان کو اسوقت ایک مضبوط جمہو ریت کی ضرورت ہے تاکہ ملک پروان چڑھ سکے۔ محمد عثمان نیایک سوال کے جواب کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ اس فیصلہ سے نواز شریف کی سیاست کو اتنا زیادہ نقصان نہیں ہو گا۔ وقت کے ساتھ ساتھ حالات بھی تبدیل ہوتے رہتے ہیں ماضی میں بھی نواز شریف کی سیاست پر پابندی لگائی گئی تھی لیکن وہ دوبارہ سیاست میں آنے میں کامیاب ہو گئے تھے۔ مختار چوہدری نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ میاں برادران کا اب سیاست میں کوئی اچھا مستقبل ہو گا۔ خاص کر اس فیصلہ کے بعد نواز شریف کی سیاست ختم ہو کر رہ جائے گی۔ انھوں مزید نے کہا کہ پاکستان میں جتنے بھی کرپٹ لوگ ہیں خواہ ان کا تعلق کسی بھی جماعت سے ہو سب پر اسی طرح مقدمات چلا کر سزا دینی چاہئے تا کہ آئندہ آنے والے سیاستدان ملک و قوم کو لوٹنے کی بجائے ملک و قوم کی بقا کے لیے کام کریں۔