• ☚ شہباز پور پل پرروکنے کی سزا‘گاڑی سوارو ں نے سیکیورٹی گارڈ کچل ڈالا
  • ☚ چوہدری محمد ارشد چیچیاں کی اہلیہ کے ایصال ثواب کیلئے ختم قل
  • ☚ حاجی محمد بشیر کو حج بیت اللہ کی سعادت پر اہم شخصیات کی مبارکباد
  • ☚ بشیر احمد کو حج کی سعادت پر اہم شخصیات کی مبارکبادیں
  • ☚ گجرات:رجسٹریشن نہ کرانے پر مالک مکان کرایہ دار سمیت گرفتار
  • ☚ موجوکی میں سسرالیوں کا بہو پر بدترین تشدد‘ ہڈی پسلی ایک کردی
  • ☚ پاکستانی قومی بھار تی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیگی:مہر فاروق
  • ☚ لالہ موسی میں گرانفروشی کا بازار گرم‘پرائس کنٹرول کمیٹیاں غیر فعال
  • ☚ مجلس قادریہ حضرت دیوان حضوری الکویت کے زیر اہتمام روحانی محفل
  • ☚ امام حسین کی شہا دت دنیا کے لیے مشعل راہ ہے:چوہدری عظمت
  • ☚ متحدہ اپوزیشن ، ن لیگ کا پی پی قیادت سے رابطہ ،ذرائع
  • ☚ فرانسیسی جنگی طیاروں کے سودے میں اربوں کی کرپشن، مودی حکومت خطرے میں
  • ☚ نواز شریف لاہور کے بعد جاتی امرا پہنچ گئے
  • ☚ سوئی گیس مہنگی، LPG سستی، قیمت میں 10 سے 143 فیصد اضافہ، LPG کے تمام ٹیکس ختم، صرف 10 فیصد GST لگے گا، بلوچستان،سندھ کیلئے CNG بھی مہنگی
  • ☚ ایشیا کپ: پاکستان فیورٹ ہے بھارت نہیں، سنجے منجریکر
  • ☚ وزیراعظم ہائوس کی 8 بھینسوں کی تفصیل سامنے آگئی
  • ☚ شریف خاندان کے پیرول میں توسیع کا نوٹیفیکیشن جاری
  • ☚ ’شریف خاندان کو مفروضے پر دی گئی سزا برقرار نہیں رہ سکتی‘
  • ☚ جمہوریت مضبوط،مزیدمستحکم ہوگی،نئے صدر کی حلف برداری جمہوری عمل کے تسلسل کیلئے اہم ہے، آرمی چیف
  • ☚ جمہوریت مضبوط،مزیدمستحکم ہوگی،نئے صدر کی حلف برداری جمہوری عمل کے تسلسل کیلئے اہم ہے، آرمی چیف
  • ☚ برطانوی نیو کلیئر ڈیٹرنٹ انفراسٹرکچر مقصد کیلئے فٹ نہیں، ایم پیز
  • ☚ برطانیہ کا بریگزٹ پلان مسترد،تھریسامے کو ہزیمت کاسامنا
  • ☚ برطانوی سیاست میں ساجدجاویدکے عروج پر برٹش ایشیائی باشندوں کاجشن
  • ☚ برطانیہ پاکستان کی سیاسی حساسیت سے واقف
  • ☚ بریگزٹ کے بعد انتقام کا خدشہ، ای یو مائیگرنٹس کو برطانوی ویزے دینے پر غور
  • ☚ سکھوں کا علیحدہ مملکت کیلئے خالصتان ایڈمنسٹریشن کا تاریخی اعلان
  • ☚ لندن: منی لانڈرنگ کے الزام میں پاکستانی سیاسی شخصیت اہلیہ سمیت گرفتار
  • ☚ بریگزٹ: یورپی یونین تھریسامے کو اپنی تجاویز پر قائل کرنے میں ناکام
  • ☚ ایم پیز کو میرے پلان یا پھر کوئی ڈیل نہیں کا انتخاب کرنا ہوگا، تھریسا مے
  • ☚ برطانیہ: منی لانڈرنگ کے الزام میں گرفتار پاکستانی کا نام سامنےآگیا
  • ☚ ایسی فلم میں کام نہیں کروں گا جسے دیکھ کر بیٹی شرمندہ ہوجائے، ابھیشیک بچن
  • ☚ دپیکا رنویر کی شادی تاخیر کا شکار
  • ☚ شلپا شیٹھی کو سڈنی ایئرپورٹ پر نسل پرستی کا سامنا
  • ☚ شعیب ملک کی تعریف کے دوران غلطی پر ماورا مذاق کا نشانہ بن گئیں
  • ☚ ایشیا کپ ،آج پاکستان روایتی حریف بھارت کو ہرانے کے لئے پرعزم
  • ☚ فخر زمان نے کس طرح خود اپنی وکٹ ضائع کی ؟
  • ☚ پاکستان کو 9 وکٹ سے شکست،بھارت فائنل میں
  • ☚ ایشیاکپ کے شیڈول میں توازن نہیں، پی سی بی
  • ☚ روتے ہوئےافغان بولر آفتاب کو شعیب ملک نےگلے لگا لیا
  • ☚ شعیب ملک نےسینئر ہونےکا حق ادا کردیا، سرفرازاحمد
  • آج کا اخبار

    نوازشریف کی وطن واپسی سے جمہوریت مستحکم ہوگی، عوام اب تبدیلی چاہتے ہیں، کمیونٹی رہنماؤں کی مختلف آراء

    Published: 11-07-2018

    Cinque Terre

    بولٹن/ مانچسٹر/ اولڈہم/ بری: احتساب عدالت کا فیصلہ آنے کے بعد یہاں کے سیاسی اور سماجی حلقوں میں پاکستان کے سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کی وطن واپسی اور25جولائی کو ہونے والے انتخابات پر سیاسی اثرات کے حوالے سے مختلف قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں۔ ایک فریق کا خیال ہے کہ میاں نوازشریف واپس نہیں جائیں گے اور اپنی اہلیہ کی بیماری کو طول دے کر کسی بھی سیاسی بارگین ہونے کا انتظار کریں گے، جبکہ دوسرے فریق کا خیال ہے کہ میاں نوازشریف کو اگر سیاست میں زندہ رہنا ہے تو انہیں پاکستان جاکر گرفتاری دینی چاہئے۔ میاں نواز شریف کے جانے سے پاکستان کا سیاسی پس منظر کیا ہوگا یہ ایک ایسا سوال ہے جو ہر پاکستانی کے ذہن میں اٹکا ہوا ہے۔ نمائندہ جنگ نے سروے کے دوران مختلف لوگوں سے رائے معلوم کی جس پر بولٹن کے سماجی رہنما ڈاکٹر سرور اشرف نے اپنے خیال کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میاں نوازشریف سزا ہونے کے بعد سیاست میں تنہا ہوگئے ہیں۔ میاں برادران کی راہیں جدا ہو چکی ہیں اور میاں نوازشریف اڈیالہ جیل میں ایک رات بھی مشکل سے گزاریں گے۔ میاں نواز شریف کو اگر سیاست میں زندہ رہنا ہے اور پاکستان کی سیاسی شطرنج پر کھیلنا ہے تو انہیں گرفتاری دینا ہوگی، ورنہ مسلم لیگ ن کا یہ شیر عوام کی نظروں میں گیدڑ بن جائے گا اور آنے والے انتخابات میں اس کے منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ سماجی رہنما راجہ عباس خان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن ایک پختہ اور حالات کا مقابلہ کرنے والی جماعت بن چکی ہے۔ میاں نوازشریف کے لیے اب جیل یا جلاوطن کی صعوبتیں برداشت کرنا کوئی بڑی بات نہیں۔ ان کی وطن واپسی سے مسلم لیگی کارکنوں کے حوصلے بلند ہوں گے، جس سے مسلم لیگ ن ایک بار پھر انتخابات میں کامیاب ہوکر ملک کی ایک نئی سیاسی سمت کا تعین کرے گی۔ مانچسٹر میں کمیونٹی رہنما بلیک سٹون کے ایم ڈی چوہدری طاہر صدیق نے کہا ہے کہ نوازشریف کی پاکستان واپسی خوش آئند عمل ہے، انہیں پاکستان جاکر عوامی اور پاکستانی عدالتوں میں اپنے مافی الضمیر کو واضح کرنا چاہئے، ان کی واپسی سے ان کی پارٹی مسلم لیگ ن کو بھی فائدہ ہوگا اور پاکستان میں حالیہ انتخابات میں بھی اور شعور پیدا ہوگا۔ تاہم کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں نہیں لینا چاہیے۔ استاد محمد صفدر کا کہنا ہے کہ میاں نوازشریف عدالت سے استثنا لے کر برطانیہ اپنی بیمار اہلیہ کی عیادت کے لیے آئے تھے، انہیں وطن واپس جاکر عدالتوں کا سامنا کرنا چاہیے۔ ان کی واپسی سے مسلم لیگ ن بھی الیکشن میں متحرک ہوگی۔ ان کا وطن واپس جانا پاکستان میں احتساب عمل اور قانون کی بالادستی کے لیے بھی بہترین ثابت ہوگا۔ استاد محمد صفدر نے کہا کہ پاکستان میں انتخابات کو صاف و شفاف ہونا چاہئے اور تمام سیاست دانوں کو انتخابی مہم چلانے کی آزادی دی جانی بھی ضروری ہے۔ چوہدری نصر اللہ خان رہنما پیپلز پارٹی برطانیہ نے کہا ہے کہ میاں نوازشریف سیاسی لیڈر ہیں۔ سیاسی لیڈر کی زندگی ان کے اپنے وطن اور عوام کے ساتھ رہنے میں ہی ہے، یہ میاں نوازشریف کا احسن اقدام ہے۔ ماضی میں پیپلز پارٹی کے مرد آہن سابق صدر پاکستان آصف زرداری بھی جیلوں میں رہے ہیں۔ مسلم لیگ ن نارتھ ویسٹ کے چیف پیٹرن ہارون کھٹانہ نے کہا ہے میاں نوازشریف کی وطن واپسی سے پاکستان میں انتخابات میں نئی روح پڑے گی، مسلم لیگ ن کے کارکنوں، لیڈروں میں نیا ولولہ و جوش بیدار ہوگا اور انتخابات غیر جانبدار ہونے کے امکانات بڑھ جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ احتساب کا عمل بھی غیر جانبدار ہونا چاہیے، صرف سیاستدان ہی نہیں بلکہ تمام کرپٹ افراد کا احتساب کیا جانا چاہیے، ہارون کھٹانہ، میاں نواز شریف کے گھر پر حملہ قابل مذمت اقدام ہے، چوہدری عبدالکریم چیئرمین مسلم لیگ ن نارتھ ویسٹ نے کہا ہے کہ میاں نوازشریف سچے محب وطن پاکستانی ہیں۔ وہ اپنے خلاف مقدمات میں آخری دن تک پابندی کے ساتھ عدالتی کارروائی میں کھڑے رہے، اب اہلیہ کی بیماری کے لیے وہ برطانیہ آئے تھے۔ ان کی واپسی میاں نوازشریف کی سچائی اور حب الوطنی کو ظاہر کرے گی اور جمہوریت کے لیے ان کی قربانی سنہری حروف میں لکھی جائے گی۔ میاں نوازشریف کی سخت سزاؤں کے بعد وطن واپسی کا فیصلہ قومی مفاد اور انتخابات کے لیے بہت اہمیت کا حامل ہے۔ اس سے جمہوریت کو استحکام ملے گا اور مسلم لیگ ن کی اہمیت بڑھے گی۔ اولڈہم کی کمیونٹی نے میاں نوازشریف کی نیب کورٹ کے فیصلے کے بعد وطن واپسی کے فیصلے کو ملکی سیاست میں اثرانداز ہونے کے امکان کو مسترد کردیا ہے۔ راجہ عبدالمعروف کا کہنا تھا کہ میاں نوازشریف کا وطن واپسی کا فیصلہ بہت اچھا ہے تاہم ملکی سیاست پر اس کے اثرات کم ہی ہونگے۔ عوامی سوچ اور شعور تبدیل ہو چکا ہے ووٹ کی عزت کی بات کرنے والے ووٹ کی حرمت کو نہیں بچا سکے، میاں مظفر علی کا کہنا تھا کہ نوازشریف کا عدالتوں کا اور سزا کا سامنا کرنے کا فیصلہ وقت کی اہم ضرورت ہے اگر میاں صاحب ایسا نہیں کرتے تو ان کی سیاست تقریباً ختم ہوجاتی۔ میاں صاحب کے بیانیہ کو تقویت ملی ہے لیکن سزا کے فیصلہ پر بھی عوامی اور پارٹی ردعمل کمزور نظر آیا۔ اسی ردعمل کے تناظر میں میاں نوازشریف کی وطن واپسی پر بھی سیاست میں ہلچل نظر نہیں آتی۔ نون لیگ کے بڑے بڑے نام یا تو پارٹی چھوڑ چکے ہیں یا انہیں بھی مقدمات اور نااہلی کا سامنا ہے ایسی بے یقینی کی صورتحال میں وطن واپسی کا فیصلہ خوش آئند لیکن اثرانداز ہونے کے امکانات نہایت کم ہیں۔ ملک الطاف کا کہنا تھا کہ نیب کورٹ کے فیصلہ کے بعد نوازشریف کی سیاست ختم ہوگی ہے۔ وطن واپسی کا فیصلہ سیاست کو بچانے کی ایک آخری کوشش ہے لیکن اس سے عوامی تاثر پر کوئی خاص اثر نہیں پڑے گا۔ عوام اب تبدیلی کی خواہاں ہے اور میاں نوازشریف کی وطن واپسی پر بھی عوامی رائے تبدیل نہیں ہوگی۔ بری میں مقیم پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی شخصیات نے نوازشریف کی پاکستان واپسی اور انتخابی مہم پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ایون فیلڈ ریفرنس میں اگرچہ میاں نوازشریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن محمد صفدر کو سزا ہوچکی ہے۔ گرفتاری کی صورت میں بھی مسلم لیگ ن کو آمدہ عام انتخابات میں فائدہ پہنچ سکتا ہے۔ مسلم کانفرنس برطانیہ کے صدر چوہدری بشیر رٹوی کا کہنا تھا کہ یقیناً نوازشریف کی ملک میں موجودگی سے ن لیگ کا ووٹ بینک برقرار رہے گا۔ پاکستانی عوام باشعور ہیں۔ سابق وزیراعظم کرپشن اور منی لانڈرنگ میں ملوث پائے گئے ہیں۔ 25جولائی کو ووٹرز قوم کے خون پسینے کی کمائی لوٹنے والوں کو مسترد کرکے سبق سکھائیں گے۔ ن لیگ یوتھ ونگ کے رہنما راجہ احمد نے کہا کہ قوم اچھی طرح جانتی ہے کہ نوازشریف کو دیوار سے لگاکر اس کو فائدہ پہنچایا گیا۔ مخالفین نوازشریف کو ٹارگٹ کرکے انتخابی عمل کو متاثر کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ چوہدری عنصر محمود نے کہا کہ نوازشریف پاکستانی عدالتوں سے سزا یافتہ ہیں، وطن واپسی پر گرفتار کرکے جیل بھیجا جائے۔ پاکستانی عوام اب ن لیگ کے دھوکے میں نہیں آئیں گے۔ عوام25جولائی کو کرپٹ سیاستدانوں کا راستہ ووٹ کی طاقت سے روکیں گے۔ نواز شریف کی پاکستانی سیاست میں اب کوئی جگہ نہیں