• ☚ چوہد ری اخلاق وڑائچ کا گرین گجرات مہم کے پائلٹ پراجیکٹ کا دورہ
  • ☚ اسد عمر کا مستعفی ہونا حکومتی نااہلی کا ثبوت ہے : عبد الغنی سندھو
  • ☚ چوہدری سلیم سرور جوڑا کا کڈنی سنٹر کا دورہ‘ پرتپاک خیر مقدم
  • ☚ میاں محمد ارشد بانٹھ کی وفات پر مختلف مکاتب فکر کا اظہار تعزیت
  • ☚ چوہدری طاہر مانڈہ کی کامیابی ن لیگ پر اعتماد کا اظہار ہے:جاویدبٹ
  • ☚ کنجاہ :سیٹھ فضل حسین کی اہلیہ کا ختم قل‘ ممتاز شخصیات کی شرکت
  • ☚ گجرات بار کے سابق صدر چوہد ری رخسار کے بھائی چوہدری افضال بیدری سے قتل
  • ☚ چوہدری برادران گجرات کی تعمیرو ترقی کے ضامن ہیں:نصر اللہ کھوکھر
  • ☚ کرپشن سے جڑ سے اکھاڑے بغیر ترقی ممکن نہیں: حسین عباس
  • ☚ اسمال اسٹیٹ ایریا کیساتھ سوتیلا پن بند کیا جائے:یاسر طارق بٹ
  • ☚ ایمنسٹی یا کریک ڈائون، کابینہ کے دوسرے اجلاس میں بھی اسکیم پر اختلافات برقرار، متعدد ارکان FBR سے ناراض، ذائع
  • ☚ ہیموفیلیا کے عالمی دن کے موقع پرخصوصی تقریب کا انعقاد
  • ☚ فیض آباد دھرنا کیس، فیصلے سے افواج پاکستان کے حوصلے پر منفی اثرات مرتب ہوئے، وزارت دفاع
  • ☚ گجرات میں 5 افراد سے منشیات اور اسلحہ برآمد کر کے مقدمات درج کر لیے گئے
  • ☚ عمران خان چند برسوں میں اثاثے کئی گنا ہوجانےکا حساب دیں، سلیمان شہباز
  • ☚ IMF سے معاہدہ اسی ماہ،معاملات طے پاگئے، 6 سے 8 ارب ڈالر قرض ملے گا، کچھ چیزیں مہنگی ہوں گی،عام آدمی متاثر نہیں ہوگا، وزیرخزانہ
  • ☚ پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان معاملات طے ‘ اربوں ڈالر کا پیکج ملے گا:کڑے معاشی بحران کا سامنا ہے: وزیر خزانہ
  • ☚ قیمتوں میں اضافہ، حکومت کا دواساز کمپنیوں کیخلاف کریک ڈائون
  • ☚ استعفیٰ دیا نہ کہیں جارہا ہوں، IMF سے اصولی اتفاق ہوگیا، اسدعمر
  • ☚ مہنگائی بڑھ گئی، برآمدات کم، وجوہ کا جائزہ لے رہے ہیں، 6 ماہ میں بہتری ہوگی، مشیر تجارت
  • ☚ کوونٹری میں تارکین وطن مخالف بریگزسٹ پارٹی کا اجلاس، مقامی آبادی کا شدید احتجاج
  • ☚ لندن: مظاہرین کا مظفرآباد میں ماحولیات کو تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ
  • ☚ ماحولیاتی آلودگی کیخلاف احتجاج جاری، مرکزی شاہراہیں بند، عوام کو شدید مشکلات، 300 مظاہرین گرفتار
  • ☚ انگلینڈ میں لینڈلارڈز پر کسی غلطی کے بغیر کرایہ دار سے مکان خالی کرانے پر پابندی
  • ☚ دو ایٹمی قوتوں کے درمیان مسئلہ کشمیر دنیا کے امن کیلئے خطرہ ہے، عبدالرشید ترابی
  • ☚ برطانیہ میں بین المذاہب کمیونٹیز آباد ہیں، سب کو اتحاد کا مظاہرہ کرنا ہوگا، افضل خان کیٹ گرین واجد خان
  • ☚ ہمارا نصب العین روشنی سب کیلئے، موتیا کے مفت آپریشنز کے ذریعے غریبوں کی دنیا روشن کرتے ہیں، عبدالرزاق ساجد
  • ☚ شرپسندوں کے عزائم اتحاد سے ناکام بنائیں گے، ویسٹ مڈلینڈز میں اسلاموفوبیا کی کوئی گنجائش نہیں، اینڈی سٹریٹ
  • ☚ تھریسامے کو اگلے ماہ اپنا عہدہ چھوڑ دینا چاہئے، ڈنکن سمتھ کا مشورہ
  • ☚ عمران خان کے خلاف کسی اتحاد کا حصہ نہیں بنیں گے، چوہدری شجاعت
  • ☚ ہالی ووڈ فلم سیریز’ایونجرز‘ کے سپرہیروبڑے پردے پرانٹری کیلئے تیار
  • ☚ آصف رضا میر امریکی ٹی وی ڈرامے میں اداکاری کے جوہر دکھائیں گے
  • ☚ نورا فتیحی ماہرہ خان کی فلم ’سپراسٹار‘ میں جلوہ گر ہوں گی
  • ☚ معروف اداکارہ حنا دلپزیر شاعرہ بن گئیں
  • ☚ مہوش حیات نے شادی سے متعلق خاموشی توڑ دی
  • ☚ ایم ڈی مقرر کرنے کی منظوری نہیں لی،احسان مانی پر غلط بیانی کا الزام
  • ☚ گورننگ بورڈ کا اقدام چیئرمین پی سی بی کیخلاف اعلان عدم اعتماد،سیٹھی
  • ☚ غلط فہمی میں کوئی نہ رہے، ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر میں رکاوٹ نہیں آئے گی، احسان مانی
  • ☚ سری لنکا سے سیریز کیلئے پاکستان انڈر19کرکٹ ٹیم کااعلان
  • ☚ انگلینڈ کو ورلڈکپ جیتنے کا یقین، بورڈ جشن کی تیاری کرنے گا
  • آج کا اخبار

    پاسپورٹ کی منسوخی کے بعد اسحاق ڈار لندن میں بے وطن ہوگئے

    Published: 10-09-2018

    Cinque Terre

    لندن حکومت پاکستان کی جانب سے پاسپورٹ منسوخ کئے جانے کے بعد سابق وزیر خارجہ لندن میں بے وطن ہوگئے ہیں، پاسپورٹ کی منسوخی کے بعد اب اسحاق ڈار پاکستان کی عدالت میں پیشی کیلئے سفر بھی نہیں کرسکیں گے، 2012میں سینیٹ میں قائد حزب اختلاف منتخب کئے جانے کے بعد اسحاق ڈار اور ان کی اہلیہ کو سفارتی پاسپورٹ جاری کیا گیا تھا، جون2013میں سینیٹ میں قائد حزب اختلاف کے عہدے سے استعفیٰ دے کر وزیر خزانہ بننے کے بعد بھی ان کو سفارتی پاسپورٹ کی سہولت حاصل رہی پاکستان کے دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ اسحاق ڈار کو وفاقی وزیر خزانہ کے عہدے سے فارغ کئے جانے کے30 دن کے اندر اپنا اوراپنی اہلیہ کا سفارتی پاسپورٹ واپس جمع کرانا چاہئے تھا لیکن انھوں نے ایسا نہیں کیا، ان کی جانب سے پاسپورٹ جمع نہ کرائے جانے پر ان کا پاسپورٹ منسوخ کیا گیا ہے، تاہم دی نیوز کے نمائندے نے اسحاق ڈار اور وزارت خزانہ کے درمیان خط و کتابت دیکھی ہے، جس میں اسحاق ڈار نے درخواست کی تھی کہ ان کو اور ان کی اہلیہ کو بلیو پاسپورٹ جاری کیا جائے تاکہ وہ سفارتی پاسپورٹ واپس جمع کراسکیں لیکن ان کی یہ درخواست اب تک منظور نہیں کی گئی، دی نیوز کے نمائندے نے وہ کاغذات دیکھے ہیں کہ جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ رواں سال 20 جولائی کو وزارت خارجہ کی جانب سے ایک خط اسحاق ڈار کی رہائش گاہ پر پہنچایا گیا، جس میں ان سے اپنا اور اپنی اہلیہ کا پاسپورٹ جمع کرانے کو کہا گیا تھا، خیال کیا جاتا ہے کہ سابقہ پاکستان مسلم لیگ ن کے سرخ پاسپورٹ رکھنے والے دیگر بہت سے وزیروں اور حکام کو بھی ایسا ہی کرنے کو کہا گیا تھا۔ 5 اگست کو اسحاق ڈار نے وزارت خارجہ کو جواب دیا اور بتایا کہ جب تک ان کو اور ان کی اہلیہ کو متبادل سرکاری پاسپورٹ جاری نہیں کیا جاتا، جس کے وہ حقدار ہیں وہ اور ان کی اہلیہ سفارتی پاسپورٹ واپس نہیں کرسکتے، اسحاق ڈار نے وزارت خارجہ کو لکھا تھا کہ وہ لندن میں زیرعلاج ہونے کی وجہ سے پاکستان واپس نہیں آسکتے اور وزارت کو اپنے ڈاکٹر کے نوٹری پبلک اور برطانوی وزارت خارجہ سے تصدیق شدہ خطوط بھی بھیجے تھے، جن میں اس بات کی تصدیق کی گئی تھی کہ ان کاعلاج جاری ہے۔ اسحاق ڈار نے وزارت خارجہ سے درخواست کی تھی کہ وہ ڈائریکٹوریٹ جنرل امیگریشنز اور پاسپورٹس کو ہدایت کرے کہ وہ سرکاری پاسپورٹ کے اجرا کیلئے لندن کے ہائی کمیشن کو ان کا اور ان کی اہلیہ کا بائیو میٹرک کرانے کی ہدایت کرے۔ دی نیوز کو پاکستان ہائی کمیشن لندن کے ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ گزشتہ ماہ اسحاق ڈارکی اہلیہ کی جانب سے سفارتی پاسپورٹ جمع کرائے جانے پر گرین پاسپورٹ جاری کردیا گیا تھا، خیال کیا جاتا ہے کہ وزارت خارجہ نے اب تک اسحاق ڈار کی درخواست منظور نہیں کی یہاں تک کہ ان کو سرکاری پاسپورٹ جاری کئے بغیر ان کا پاسپورٹ منسوخ کردیا گیا، ماہرین قانون کا کہنا ہے کہ قومی احتساب بیورو نے اسحاق ڈار کی ملک بدری کیلئے انٹرپول سے رابطہ کر رکھا ہے لیکن اب ان کے پاسپورٹ کی منسوخی سے یقیناً انھیں فائدہ پہنچے گا، کیونکہ اب انھیں حکومت کے سخت سیاسی اقدام کا نشانہ تصور کیا جائے گا۔ وکلا کا کہنا ہے کہ اس بات کے بہت کم امکانات ہیں کہ انٹرپول تحریک انصاف کی حکومت کی درخواست قبول کرے، کیونکہ حال ہی میں انٹرپول پرویز مشرف اور حسین حقانی کے خلاف ریڈ وارنٹ جاری کرنے سے انکار کرچکا ہے۔ بیرسٹر امجد ملک کا کہنا ہے کہ اگر اسحاق ڈار کو سرکاری پاسپورٹ جاری نہ کیا گیا تو وہ بے وطن ہوجائیں گے اور سیاسی وجوہ کی بنیاد پر جنیوا کنونشن کی دفعہ ون اے کے تحت تحفظ طلب کرسکیں گے۔ انھوں نے کہا کہ اگر اسحاق ڈار کا پاسپورٹ اور ان کی سفارتی حیثیت واپس لی گئی تو سینیٹ کارکن ہونے کی بنیاد پر ان کے پاس اقوام متحدہ سے تحفظ طلب کرنے اور غیرملکی نقل وحرکت کو یقینی بنانے اور بین الاقوامی حیثیت حاصل کرنے کیلئے اقوام متحدہ سفری ڈاکومنٹس طلب کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں رہے گا۔