• ☚ شہباز پور پل پرروکنے کی سزا‘گاڑی سوارو ں نے سیکیورٹی گارڈ کچل ڈالا
  • ☚ چوہدری محمد ارشد چیچیاں کی اہلیہ کے ایصال ثواب کیلئے ختم قل
  • ☚ حاجی محمد بشیر کو حج بیت اللہ کی سعادت پر اہم شخصیات کی مبارکباد
  • ☚ بشیر احمد کو حج کی سعادت پر اہم شخصیات کی مبارکبادیں
  • ☚ گجرات:رجسٹریشن نہ کرانے پر مالک مکان کرایہ دار سمیت گرفتار
  • ☚ موجوکی میں سسرالیوں کا بہو پر بدترین تشدد‘ ہڈی پسلی ایک کردی
  • ☚ پاکستانی قومی بھار تی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیگی:مہر فاروق
  • ☚ لالہ موسی میں گرانفروشی کا بازار گرم‘پرائس کنٹرول کمیٹیاں غیر فعال
  • ☚ مجلس قادریہ حضرت دیوان حضوری الکویت کے زیر اہتمام روحانی محفل
  • ☚ امام حسین کی شہا دت دنیا کے لیے مشعل راہ ہے:چوہدری عظمت
  • ☚ متحدہ اپوزیشن ، ن لیگ کا پی پی قیادت سے رابطہ ،ذرائع
  • ☚ فرانسیسی جنگی طیاروں کے سودے میں اربوں کی کرپشن، مودی حکومت خطرے میں
  • ☚ نواز شریف لاہور کے بعد جاتی امرا پہنچ گئے
  • ☚ سوئی گیس مہنگی، LPG سستی، قیمت میں 10 سے 143 فیصد اضافہ، LPG کے تمام ٹیکس ختم، صرف 10 فیصد GST لگے گا، بلوچستان،سندھ کیلئے CNG بھی مہنگی
  • ☚ ایشیا کپ: پاکستان فیورٹ ہے بھارت نہیں، سنجے منجریکر
  • ☚ وزیراعظم ہائوس کی 8 بھینسوں کی تفصیل سامنے آگئی
  • ☚ شریف خاندان کے پیرول میں توسیع کا نوٹیفیکیشن جاری
  • ☚ ’شریف خاندان کو مفروضے پر دی گئی سزا برقرار نہیں رہ سکتی‘
  • ☚ جمہوریت مضبوط،مزیدمستحکم ہوگی،نئے صدر کی حلف برداری جمہوری عمل کے تسلسل کیلئے اہم ہے، آرمی چیف
  • ☚ جمہوریت مضبوط،مزیدمستحکم ہوگی،نئے صدر کی حلف برداری جمہوری عمل کے تسلسل کیلئے اہم ہے، آرمی چیف
  • ☚ برطانوی نیو کلیئر ڈیٹرنٹ انفراسٹرکچر مقصد کیلئے فٹ نہیں، ایم پیز
  • ☚ برطانیہ کا بریگزٹ پلان مسترد،تھریسامے کو ہزیمت کاسامنا
  • ☚ برطانوی سیاست میں ساجدجاویدکے عروج پر برٹش ایشیائی باشندوں کاجشن
  • ☚ برطانیہ پاکستان کی سیاسی حساسیت سے واقف
  • ☚ بریگزٹ کے بعد انتقام کا خدشہ، ای یو مائیگرنٹس کو برطانوی ویزے دینے پر غور
  • ☚ سکھوں کا علیحدہ مملکت کیلئے خالصتان ایڈمنسٹریشن کا تاریخی اعلان
  • ☚ لندن: منی لانڈرنگ کے الزام میں پاکستانی سیاسی شخصیت اہلیہ سمیت گرفتار
  • ☚ بریگزٹ: یورپی یونین تھریسامے کو اپنی تجاویز پر قائل کرنے میں ناکام
  • ☚ ایم پیز کو میرے پلان یا پھر کوئی ڈیل نہیں کا انتخاب کرنا ہوگا، تھریسا مے
  • ☚ برطانیہ: منی لانڈرنگ کے الزام میں گرفتار پاکستانی کا نام سامنےآگیا
  • ☚ ایسی فلم میں کام نہیں کروں گا جسے دیکھ کر بیٹی شرمندہ ہوجائے، ابھیشیک بچن
  • ☚ دپیکا رنویر کی شادی تاخیر کا شکار
  • ☚ شلپا شیٹھی کو سڈنی ایئرپورٹ پر نسل پرستی کا سامنا
  • ☚ شعیب ملک کی تعریف کے دوران غلطی پر ماورا مذاق کا نشانہ بن گئیں
  • ☚ ایشیا کپ ،آج پاکستان روایتی حریف بھارت کو ہرانے کے لئے پرعزم
  • ☚ فخر زمان نے کس طرح خود اپنی وکٹ ضائع کی ؟
  • ☚ پاکستان کو 9 وکٹ سے شکست،بھارت فائنل میں
  • ☚ ایشیاکپ کے شیڈول میں توازن نہیں، پی سی بی
  • ☚ روتے ہوئےافغان بولر آفتاب کو شعیب ملک نےگلے لگا لیا
  • ☚ شعیب ملک نےسینئر ہونےکا حق ادا کردیا، سرفرازاحمد
  • آج کا اخبار

    ’شریف خاندان کو مفروضے پر دی گئی سزا برقرار نہیں رہ سکتی‘

    Published: 13-09-2018

    Cinque Terre

    اسلام آباد ہائیکورٹ میں نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزا معطلی کیس کی سماعت ہوئی ۔جسٹس اطہر من اللہ نے کیس کی سماعت کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ ہم نے ٹرائل کورٹ کے فیصلے کو دیکھنا ہے جوخود کہتا ہے کہ وہ مفروضے پر مبنی ہے، مفروضے کی بنیاد پر کرمنل سزا برقرار نہیں رہ سکتی ۔ہائی کورٹ نے سپریم کورٹ میں غلط بیانی کرنے پر نیب پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔جسٹس میاں گل حسن اورنگ زیب نے کہا کہ سپریم کورٹ کو بتایا گیا ہے کہ ہائیکورٹ نے ریفرنسز منتقل کرنے کی درخواست پر تحریری فیصلہ جاری نہیں کیا جبکہ حقیقت یہ ہے کہ 20 اگست کو تحریری فیصلہ جاری کیا جا چکا ہے۔جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ نیب کا یہ رویہ انتہائی نامناسب ہے، نیب کے ڈپٹی پراسیکوٹر جنرل سردار مظفر عباسی کل پیش ہوکر بتائیں کہ سپریم کورٹ میں یہ گمراہ کن بیان کس نے دیا۔دوران سماعت عدالت نے نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث سے استفسار کیا کہ کوئی ایسی دستاویز ہے جو نواز شریف کی لندن فلیٹس کی ملکیت ظاہر کرے۔ خواجہ حارث نے کہا کہ استغاثہ نے ایسی کوئی دستاویز پیش نہیں کی۔جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ نواز شریف خود بھی میاں شریف کے زیر کفالت ہو سکتے تھے، مشترکہ خاندانی نظام میں اگر بچے فلیٹس میں رہائش پذیر ہوں تو نیب کو بتانا پڑے گا وہ کس کے زیر کفالت ہیں، احتساب عدالت نے تو مفروضے کی بنیاد پر کہا بچے والد کے زیر کفالت ہیں۔ خواجہ حارث نے کہا کہ احتساب عدالت نے فیصلے میں لکھا کہ عموما بچے والدین کی زیر کفالت ہوتے ہیں اس لیے نواز شریف مالک ہیں۔ہائی کورٹ نے پوچھا کہ کیا کوئی ایسا ثبوت پیش کیا گیا کہ بچے نواز شریف کے زیر کفالت تھے اور میاں شریف کے نہیں؟ خواجہ حارث نے جواب دیا کہ ایسا کوئی ثبوت یا دستاویز موجود نہیں۔جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ احتساب عدالت کے فیصلے میں کہا گیا کہ مریم نواز اپنے والد کے زیر کفالت تھیں اور نواز شریف نے مریم کے نام پر جائیداد بنائیں، تو کیا مریم کو اثاثے چھپانے پر سزا سنائی گئی؟جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دئیے کہ مریم نواز کو ٹرائل کورٹ نے بینیفشل اونر قرار دے کر والد کی پراپرٹی چھپانے پر سزا سنائی، مریم کا کردار تو تب سامنے آئے گا جب نواز شریف کا اس پراپرٹی سے تعلق ثابت ہو گا، ہم نے ٹرائل کورٹ کے فیصلے کو دیکھنا ہے جو خود کہتا ہے کہ وہ مفروضے پر مبنی ہے، مفروضے کی بنیاد پر فوجداری سزا برقرار نہیں رہ سکتی، پہلے نوازشریف کا فلیٹس سے تعلق ثابت ہوگا تو مریم نواز کا کردار آئے گا، جے آئی ٹی نے تو کہا ہے کہ ایسی کوئی دستاویز نہیں ہے جس سے نوازشریف کا فلیٹس سے تعلق ثابت ہو۔
    کیس کی مزید سماعت کل تک ملتوی کردی گئی