• ☚ مریضو ں کی سہولیات کیلئے بی ایچ یوز چوبیس گھنٹے کھلے رکھنے کا فیصلہ
  • ☚ میونوال :بینک کی اقساط نہ دینے پر رکشہ ڈرائیور کو گولیاں مار دی گئیں
  • ☚ پولیس کو ایمرجنسی کال پر گمراہ کرنیوالے کی سختی ‘گرفتاری کیلئے چھاپے
  • ☚ واپڈا نے بجلی چوروں کا گھیرا تنگ کر دیا‘ گجرات اور کنجاہ میں آپریشن
  • ☚ گجرات پولیس کا اسلحہ برداروں اور منشیات فروشوں کیخلاف آپریشن
  • ☚ طلبا گروپوں میں تصادم اور فائرنگ ‘ تعلیمی اداروں میں سرچ آپریشن کا فیصلہ
  • ☚ ٹریفک حادثات میں نوجوان جاں بحق‘ خاتون سمیت نصف درجن افراد زخمی
  • ☚ حکومت کی نئی لیبر پالیسی کے مثبت اثرات مرتب ہونگے:دلدار جٹ
  • ☚ ٹریفک حادثے میں جاں بحق ہونیوالا نوجوان سفیان سپردخاک
  • ☚ ریسکیو 1122کے زیر اہتمام نجی سکول میں تربیتی ورکشاپ کا انعقاد
  • ☚ عمران خان کے 6 غیر ملکی دوروں کے اخراجات سامنے آگئے
  • ☚ نیب نے آصف زرداری اور بلاول بھٹو کو 13 دسمبر کو طلب کرلیا
  • ☚ کراچی: ایم کیو ایم پاکستان کی محفل میلاد میں دھماکا، 6 زخمی
  • ☚ صدر مملکت کا ٹیلی فون لگوانے کیلئے رشوت کا انکشاف
  • ☚ میڈیا 6 ماہ صرف ترقی دکھائے، آگے وقت بہت اچھا یا بہت خراب، آج پرانی فوج نہیں، ایک ایک اینٹ لگاکر پاکستان دوبارہ بنارہے ہیں، فوجی ترجمان
  • ☚ ’’مریم اورنگزیب جھوٹی ہیں، کسی سے مخلص نہیں‘‘
  • ☚ قطری شہزادے کو نئے پاکستان میں بھی ’تلور‘ کے شکار کی اجازت
  • ☚ ہوسکتا ہے کچھ وزراء کو ہٹا دیں، وزیراعظم
  • ☚ شاہ محمود قریشی کا سشما سوراج کو کرارا جواب
  • ☚ لاڈلے کوکھیلنے کیلئے ملک دیدیاگیا، یوٹرن لینا اچھا ہے تو بجلی، گیس کی بڑھائی ہوئی قیمتوں اور مہنگائی پرلیں، بلاول بھٹو
  • ☚ معاشی و سیاسی دبائو،فرانس کی طرح برسلز میں بھی احتجاجی مظاہرے،نوجوانوں کی بھر پور شرکت
  • ☚ دہشت گرد کیمیائی حملوں کا منصوبہ بنا رہے ہیں، برطانوی حکام کا انتباہ
  • ☚ بریگزٹ ڈیل مسترد کی تو غیر معمولی خطرناک صورتحال کا سامنا ہوسکتا ہے،تھریسامے
  • ☚ فواد چوہدری کی برطانوی اور ہالی ووڈ اداکاروں کو پاکستان آنے کی دعوت
  • ☚ ناروے پلس تھریسا مے پلان کا معقول متبادل آپشن ہو سکتا ہے، امبر رڈ
  • ☚ فواد چوہدری لندن میں پکنک پر ہیں،وزیر اعظم نے وزارت اطلاعات میں آنے کی پیشکش کی ہے،شیخ رشید
  • ☚ مسئلہ کشمیر حل کئے بغیر امن کا خواب بلا جواز ہے،بیرسٹر عبدالمجید ترمبو
  • ☚ منی لانڈرنگ سے نمٹنے کی برطانوی کوشش قابل تعریف ہیں، ایف اے ٹی ایف
  • ☚ ایم پیز کو بیک سٹاپ پر اختیار دینے کی تجویز پر تھریسامے کو تنقید کا سامنا
  • ☚ پاکستان نے فائنل اپیل رد کرکے18 فلاحی تنظیموں کوملک سے نکال دیا
  • ☚ ’دیپیکا اور رنویر‘ شادی کی تقاریب کا احوال
  • ☚ انسٹا گرام 2018 میں زیادہ فالو کی جانے والی سیلیبرٹیز
  • ☚ ’مائیکل جیکسن‘ دنیا کا مشہور ترین پاپ اسٹار
  • ☚ میکسیکو کی حسینہ مس ورلڈ منتخ
  • ☚ فواد اورماہرہ کی ’دی لیجنڈ آف مولا جٹ ‘ کب ریلیز ہوگی؟ تاریخ کا اعلان ہوگی
  • ☚ ایمر جنگ ایشیا کپ ، پاکستان کو شکست
  • ☚ لاہور قلندرز نے محمد حفیظ کو کپتان مقرر کردیا
  • ☚ بیرون ملک سے افسران کو لانے کا مقصد بورڈ کو پروفیشنل خطوط پر چلانا ہے،احسان مانی
  • ☚ قومی ٹیم کو نئے اسٹارز پی ایس ایل سے نہیں ملے، باسط عل
  • ☚ صرف میری وجہ سےٹیم ہار رہی ہوگی تو قیادت چھوڑ دوں گا، سرفراز احمد
  • آج کا اخبار

    آرٹیکل35اے پر کشمیر ی ڈائسفرا اسٹیئر نگ گروپ کا قیام ، کمیٹی تشکیل

    Published: 07-10-2018

    Cinque Terre


    لوٹن: جموں کشمیر لبریشن فرنٹ سفارتی شعبہ کے انچارج ظفر خان نے آرٹیکل 35اے کے حوالیسے بھارتی سازش کو بے نقاب کرنیکے لیے ایک اجلاس کا اہتمام کیا جس میں متعدد تنظیموں سے متعلق کمیونٹی کے مختلف طبقات سے متعلق رہنماؤں نے شرکت کی۔ اجلاس الخدمت سنٹر لوٹن میں منعقد ہوا۔ شرکاء کو جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے برطانیہ کے صدر صابر گل، جنرل سیکرٹری سید تحسین گیلانی، ملک اعجاز اور صدر لوٹن راجہ کمان افسر نیخوش آمدید کیا۔اس موقع پر 5 رکنی کشمیری ڈائیسفرا سٹیرنگ گروپ آن 35 اے کا قیام عمل میں لایا گیا جس میں سید نذیر گیلانی، ظفر خان ، عتیق ملک، طاہر بوستان اور صادق سبہانی کو شامل کیا گیا ہے۔ یہ گروپ اس بات کا جائزہ لے گا کہ کیا سپریم کورٹ آف بھارت میں پہلے سے دائر پٹیشن کشمیری عوام کے حق میں ہے یا بھارت کے حق میں ہے اور کیا ڈائیسفرا کے کشمیری اس کیس میں ایک پارٹی بن سکتے ہیں اجلاس کے بعد فرنٹ کے سینئر اور دیرینہ رہنما ملک اعجاز نے جنگ کو بتایا کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کی اس بھارتی سازش کو اجلاس میں تفصیل سے ڈسکس کیا گیا، کشمیری رہنماوں نے اس بات پر سخت تشویش کا اظہارکیا ہے کہ بھارت رائے شماری کے عمل کو متاثر کرنے کے لیے کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کی منصوبہ بندی کر رہاہے اور اس حوالے سے آرٹیکل 35 اے کی کلیدی اہمیت ہے۔ مگر برطانیہ میں کشمیری ڈائیسفرا اس بات کا عزم کرتی ہے کہ وہ اپنے قومی تشخص ، پہچان اور اپنے وجود کو برقرار رکھنے کے لیے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرے گی۔ فرنٹ کے بزرگ رہنما ملک اعجاز نے کہا کہ یہ امر خوش آئندہے کہ جے کے ایل ایف کی کال پر نہ صرف آزادی پسند قوم پرست کشمیری رہنما بھی اجلاس میں شریک ہوئے بلکہ مختلف الفکر عمائدین نے شرکت کی۔ یہ پروگرام مکمل طور پر غیر سیاسی تھا۔ شرکاء میں کشمیر میں لندن سے کشمیر میں حقوق انسانی کے حوالے کام کرنے والی معروف شخصیت سید نذیر گیلانی، لوٹن کی ابھرتی ہوئی سیاسی شخصیت عتیق ملک، چیئرمین بلڈنگ راجہ اکبرداد خان ، سابق میئر لوٹن چوہدری مسعود اختر ، کونسلر راجہ وحید اکبر، کونسلر طاہر ملک، پی پی ایکشن کمیٹی کے اعظم خان راجہ، صدر کشمیر تحریک انصاف لوٹن چوہدری محمد شفاعت پوٹھی، ملک رفیق، برمنگھم سے چیئرمین جموں کشمیر لبریشن الائنس نجیب افسر ، چوہدری جاوید ملک، قوم پرست کشمیری طاہر بوستان،راجہ منور خان اور صادق سبہانی شرکاء میں شامل تھے۔ اس موقع پر واضح کیا گیا کہ بھارتی سپریم کورٹ کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیر میں مداخلت کا کوئی اختیار ہی نہیں اس لیے اگر آرٹیکل 35 اے کے حوالے کوئی بھی فیصلہ کیا گیا تو اسے انٹرنیشل کورٹ آف جسٹس میں چیلنج کیا جائے گا۔ اس ایشو پر تمام کشمیری متحد ہیں اور کشمیری ڈائیسفر ہر پلیٹ فارم سے بھارت کی اس سازش کے خلاف آواز بلند کرے گی کشمیری رہنماوں نے کہا کہ کشمیر کی مسلم اکثریتی ریاست کو اقلیت میں تبدیلی کی کوشش، ہر سطح پر مذمت کرتے ہیں۔ مختلف رہنماؤں نے کہا کہ آرٹیکل 35 اے کے حوالے سے برطانیہ کے ہر شہر میں کشمیری سخت ردعمل کا اظہار کر رہے ہیں۔ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ برطانیہ کے سنیئر رہنماء ملک اعجاز نے کہا ہے کہ بھارتی حکومت کی سازش کو وسیع سطح پر بے نقاب کیا جائے گا یہ کشمیر کے خصوصی سٹیٹس کو ختم کرنیکی ناپاک جسارت ہے کشمیر کے مسئلہ کے حل سے دلچسپی رکھنے والے تمام احباب کو اس حوالے سے متحد ہو کر اس سازش پر آواز اٹھانے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرٹکل 35A کے باریمیں واضح تھا کہ بھارتی حکومت اور عدلیہ کو اسے ختم کرنے یاترمیم کرنے کا کوئی اختیار نہیں اس سے کشمیر کی خصوصی حیثیت قائم ہے۔انہوں نے جنگ سے خصوصی بات چیت میں کہا کہ 1927 سے بیرون ریاست لوگوں کو ریاستی زمین خریدنے یا اسے حاصل کرنے پر پابندی عائد کرکے کشمیرکے عوام کے خصوصی اختیارات اور ان کے مالکانہ حقوق کا تحفظ کیا گیا تھا مگر اتنے سال گزرنے کے بعد اس پر شب خون مارنے کی کوشش کی جارہی ہے مودی سرکار ریاستی مسلم اکثریت کو ختم کرنے کے لیے مختلف حربے استعمال کر رہی ہے لیکن برطانیہ کے کشمیری بیدار ہیں اور وہ بھارت کی اس طرح کی کوشش کو ہر سطح پر ایکسپوز کریں گے انہوں نے کہا اس حوالے سے آزادکشمیر حکومت اور وہاں کے سیاسی زعماء کا کردار بھی قابل غور ہے جو اپنے حصے کا کردار ادا کرنے میں ناکام رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیری یہ سمجھتے ہیں کہ بھارت ہر حربہ استعمال کرنے کے بعد اب عدالتی طریقے سے ہماری شناخت ختم کرنے کے درپے ہے اور برطانوی کشمیری متنبہ کرتے ہیں کہ اگر کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کی ساش کو بند نہ کیا گیا تو برٹش کشمیری اعلی سطح پر احتجاج کریں گے انہوں نے کہا کہ بھارت کی سپریم کورٹ کو اس قانون کو کالعدم کرنے یا اس میں ترمیم کرنے کا کوئی اختیار نہیں ہے اور سٹیٹ سبجکٹ قانوں پر اثر انداز ہونے کی ہر سازش کا تمام کشمیری مل کر توڑ کریں گے۔ اس حوالیسے کشمیر کی مزاحمتی تحریک کی جانب سے احتجاج کال کی برطانیہ کے کشمیری مکمل حمایت کرتے ہیں۔