• ☚ گیس بحران بڑھتے ہی ایل پی جی گیس ری فلنگ کا دھندہ چمک اٹھا
  • ☚ گجرات: ڈی ایس پیز کے دفاتر میں ویڈیو لنک کانفرنس روم قائم
  • ☚ گجرات:ایف آئی اے کو 10سال سے مطلوب 2 انسانی اسمگلرگرفتار
  • ☚ راجہ ارشد محمود جماعت اسلامی کی فری لیگل کمیٹی کے صدر مقرر
  • ☚ گجرا ت پریس کلب اور بار کابینہ کے اعزاز میں ظہرانہ
  • ☚ ایلیٹ سٹوڈنٹس فیڈریشن کے عہدیداران کا اجلاس‘ مختلف امور پر گفتگو
  • ☚ چوہدر ی بنگش خاں کی دعوت ولیمہ ‘ اہم شخصیات کے اکٹھ میں تبدیل
  • ☚ حاجی یوسف گل کا دورہ گجرات بار‘ نومنتخب کابینہ کیلئے نیک خواہشات
  • ☚ پنجاب گروپ آف کالجز کے زیر اہتمام طالبات کیلئے ایلیٹ ٹیسٹ
  • ☚ اقساط پرموٹر سائیکلیں فروخت کرنیوالوں نے وصولی کیلئے غنڈے پال لیے
  • ☚ عمران پانچ سال پورے نہیں کریں گے، اتنا دیوار سے نہ لگائو کہ عوام میرے ہاتھ میں نہ رہیں، آصف زرداری
  • ☚ گوشوارے جمع نہ کرنے پر،فواد چوہدری اور4وزراء سمیت332ارکان پارلیمنٹ کی رکنیت معطل
  • ☚ آپ لوگ کام نہیں کرسکتے، ملک سے محبت بھی کم ہوگئی، چیف جسٹس اسد عمر پر برہم
  • ☚ قرضے آرمی چیف کی وجہ سے ملے، عمران کا کمال نہیں، فوجی عدالتوں سے دہشت گردی ختم ہوئی، شہبازشریف
  • ☚ شریف فیملی سے ایک اور خاتون کی سیاسی انٹری
  • ☚ ’دوائی نہ دینے والی حکومت نوکریاں کیا دے گی‘
  • ☚ بزم غنیمت وشریف کنجاہی کی نئی تنظیم سازی کردی گی صدرسخی کنجاہی جنرل سیکرٹری ڈاکٹرمحمدعبدالمالک ہونگے
  • ☚ عوام مہنگائی کے سونامی میں ڈوب گئے،اسلام آباد پر چڑھائی کی توحکومتی تابوت میں آخری کیل ہوگی،بلاول بھٹو
  • ☚ ایف اے ٹی ایف نے پاکستانی موقف تسلیم کرلیا
  • ☚ علیمہ خان کی امریکی ریاست نیو جرسی میں بھی جائیداد نکل آئی
  • ☚ یورپ وا مریکہ میں شدید برف باری کا سلسلہ جاری
  • ☚ یوٹیوب نے متنازع ٹامی رابنسن کے اکائونٹ پر اشتہارات معطل کردیئے
  • ☚ برطانوی ڈرائیوروں کو نوڈیل بریگزٹ وارننگ دیدی گئی
  • ☚ 2افرادلوٹ مار کے دوران چاقو گھونپے جانے کے بعد اسپتال میں زیر علاج
  • ☚ یورپی یونین سے نکلنے کے متعلق نیا ریفرنڈم کرایا جائے،نکولا سٹرجن
  • ☚ برطانوی حکومت کو پارلیمنٹ میں شکست،یورپی یونین سے نکلنے کے متعلق نیا ریفرنڈم کرایا جائے،نکولا سٹرجن
  • ☚ تھریسامے اپنی حکومت بچانے میں کامیاب، تحریک عدم اعتماد 19ووٹوں سے ناکام
  • ☚ ویسٹ مڈلینڈز پولیس نے 16 ہزار600 پرتشدد جرائم ریکارڈ ہی نہیں کئے
  • ☚ مانچسٹر،ابوظہی جانے والی پرواز کے کیبن میں سموک پر ایمرجنسی لینڈنگ
  • ☚ بریگزٹ پر حکومت کی ڈیل نامنظور، 3 دن میں پلان B پیش کرنا ہوگا
  • ☚ پاکستانی اداکارہ ایمان علی بھی شادی کی تیاریوں میں مصروف
  • ☚ ملک کے ناموراداکارگلاب چانڈیو انتقال کرگئے
  • ☚ کراچی میں میوزیکل کنسرٹس کا دور واپس آگیا
  • ☚ انوشکا شرما کو تمباکو کے اشتہار میں کام کرنا مہنگا پڑگیا
  • ☚ فلم سے کیوں نکالا؟ تاپسی پنو پھٹ پڑیں
  • ☚ ایشین جونیئر اسکواش، پاکستان کی کامیابی
  • ☚ خواتین کرکٹ ٹیم کا تربیتی کیمپ شروع
  • ☚ کراچی میں کھیلنے کا تجربہ ناقابل یقین تھا، ڈومینی
  • ☚ میراتھن ریس کے روٹ کی منظوری
  • ☚ نئے ہاکی عالمی چیمپئن بیلجیم پر میچز فکس کرنے کا شبہ
  • آج کا اخبار

    آف شور دولت پر ٹیکس چوری روکنےکے یورپی یونین رولز میں لوپ ہولز کا انکشاف

    Published: 17-10-2018

    Cinque Terre

    لندن : کمپنیز اور لوگوں کے اپنی آف شور دولت کو چھپانے کو مشکل تر بنانے کیلئے یورپی یونین کے اینٹی ٹیکس ایویژن رولز میں لوپ ہولز کا انکشاف ہوا ہے، جس کا مطلب یہ ہے کہ اب بھی یورپی ملکوں کی کمپنیز اور یورپی عوام اپنے غیر ملکی اکائونٹس کو ٹیکس حکام سے خفیہ رکھ سکتے ہیں۔ 2017 میں کامن رپورٹنگ سٹینڈرڈز متعارف کرائے جانے کے بعد یورپی یونین کے ملکوں نے اوورسیز ریذیڈنٹس کے اکائونٹس کے بارے میں فنانشل معلومات کا تبادلہ کیا ہے جوکہ ٹیکس چوری روکنے کیلئے ڈیزائن کئے گئے ہیں۔ آف شور ہولڈنگز کی معلومات اس ملک کو بھیجی جاتی ہیں، اکائونٹ ہولڈر جہاں کا رجسٹرڈ ریذیڈنٹ ہوتا ہے۔ جہاں حکام یہ پتہ لگاتے ہیں کہ اس رقم پر مکمل طریقے سے ٹیکس ادا کیا گیا ہے۔ یہ معلومات لو ٹیکس جو ریڈکشنز مثال کے طور پر کے مین آئزلینڈ سے بھی شیئر کی جاتی ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ دولت مند افراد کمپنیز اور انویسٹرز رولز میں موجود ان لوپ ہولز سے فائدہ اٹھا کر اپنی رقم کو ٹیکس حکام سے چھپا سکتے ہیں۔ یورپین گرین پارٹی کی رپورٹ کے مطابق ایک مسئلہ یہ ہے کہ اس ایکسر سائز میں تمام رکن ممالک حصہ نہیں لیتے۔ امریکہ ایک اہم پارٹنر ہے، جو اس میں موجود نہیں ہے، تاہم اس نے جزوی معلومات فراہم کرنے کا وعدہ کیا ہے۔ آسٹریا اور بلغاریہ کو امریکہ سے کوئی معلومات نہیں ملتی ہیں۔ جون 2018 میں کم از کم 43 ممالک نے کامن رپورٹنگ سٹینڈرڈ کو نافذ کرنے کا وعدہ نہیں کیا۔ ان میں مونٹی نیگرو، سربیا اور یوکرائن بھی شامل ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ کسی بی یورپی شہری یا کمپنی کیلئے یہ انتہائی آسان راستہ ہے کہ وہ ان میں سے کسی بھی ایک ملک میں یا امریکہ میں کمپنی کے نام سے اکائونٹ کھول کر دولت کے بارے میں معلومات کی آٹومیٹک ایکس چینج سے بچ سکتے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ ایک اور لوپ ہول دولت مند انویسٹرز کیلئے گولڈن ویزا دینے کی سہولت ہے، جس کے تحت کوئی بھی شخص بڑی سرمایہ کے ذریعے شہریت حاصل کرسکتا ہے۔ اگر کوئی شخص اٹلی میں رہتا ہے تو وہ سرمایہ کاری کی بنیاد پر قبرص کی شہریت خرید سکتا ہے۔ اس کا نام بھی معلومات کی فراہمی کے معاہدے میں شامل ہے، ان میں سے صرف 33 کا تعلق یورپی یونین سے ہے یا وہ اس میں ہیں۔ جرمن ایم ای پی اور یورپین گرین پارٹی کے رکن یون جیگولڈ نے کہا کہ یہ رولز ٹیکس چوری کو روکنے میں بڑی پیشرفت ہے۔ اب یورپ کو ان میں موجود لوپ ہولز کو بند کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کرنے چاہئیں، جن کا انکشاف اس ریسرچ رپورٹ میں کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس چوری کو روکنا صرف نعرہ نہیں ہونا چاہئے بلکہ اقدامات سے اس کا اظہار بھی ہوناچاہئے۔ رپورٹ میں زور دیا گیا کہ یورپین کمیشن رولز پر نظرثانی کرے تاکہ تمام فنانشل سینٹرز اور ٹیکس ہیونز کو مجبور کیا جا سکے کہ وہ اکائونٹس ہولڈرز کی معلومات رکن ملکوں کو فراہم کریں۔ اگر کوئی ریاست ایسا کرنے میں ناکام رہے تو اس پر پابندیاں عائد کی جائیں۔