• ☚ معروف نعت خواں قاری غلام سرور نقشبندی کا صاحبزادہ ماکو کی پہاڑیوں میں سیکورٹی گارڈز کی فائرنگ سے جاں بحق
  • ☚ ون ڈش کی خلاف وزری پر جلالپورجٹاں کے میرج ہال میں چھاپے ،رنگ برنگے کھانے قبضہ کرلئے گئے
  • ☚ پالتوکتے کوچھریاں مارکرقتل کرنیکامعاملہ،واقعہ کاسخٹ نوٹس لے لیاگیا
  • ☚ ناروالی سنٹر میں پانچویں جماعت کا امتحان پر امن طریقہ سے ہو رہا ہے
  • ☚ ککرالی ہلاکت کیس ،DSPکھاریاں میاں محمد ارشد کومعطل کردیاگیا
  • ☚ علی بٹ اور فیصل بٹ کی سید مصطفی گیلانی کو ایس پی انویسٹی گیشن تعینات ہونے پر مبارکباد
  • ☚ جھیورنوالی سے 87پتنگیں برآمد ،کنجاہ پولیس کامیاب آپریشن
  • ☚ پنجاب پولیس نے اپنا ویب ٹی وی چینل بنانیکافیصلہ کرلیا،میگزین بھی شائع ہوگا
  • ☚ فاران انسٹی ٹیوٹ کی قابل قدرکاوشیں ہیں،طارق جاوید چوہدری کوخراج تحسین پیش کرتے ہیں:ڈاکٹراعجاز
  • ☚ ایس پی انویسٹی گیشن کے آتے ہی ایس پی ہیڈکوارٹر کاتبادلہ ،چارج چھوڑدیا
  • ☚ پاک بھارت کشیدگی، سعودی ولی عہد کے دورہ بھارت کی چکا چوند ماند پڑنے کا خطرہ
  • ☚ پی ٹی آئی کے پاس ہے کیا جو این آر او لیں، خواجہ آصف
  • ☚ قطرکی پاکستان کو ادھارLNGدینے سے معذرت، معاشی دباؤبڑھنے کاامکان
  • ☚ نیب نےن لیگ کے رہنما کامران مائیکل کو گرفتار کرلیا
  • ☚ ’’وزیر ِجھوٹ و خرافات نے جھوٹوں سے بھرپور پریس کانفرنس کی ‘‘
  • ☚ ’’وزیر ِجھوٹ و خرافات نے جھوٹوں سے بھرپور پریس کانفرنس کی ‘‘
  • ☚ عمران خان نے سہانے خواب دکھا کر عوام کو دھوکا دیا، احسن اقبال
  • ☚ ’’مڈٹرم الیکشن کی باتیں قیاس آرائیاں ہیں‘‘
  • ☚ سوات اور گردونواح میں زلزلے کے جھٹکے
  • ☚ اسلام آباد سمیت ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے کے جھٹکے
  • ☚ عمران خان نے بھارتی دھمکیوں کا دو ٹوک جواب دے کر قوم کے دل جیت لئے، کمیٹی رہنما
  • ☚ تھریسامے کے ’’مخالفانہ ماحول‘‘میں 5 سال قبل گرفتار طالب علم اب تک زیرحراست
  • ☚ کلبھوشن بھارتی خفیہ ایجنسی ’’را‘‘ کیلئے کام کر رہا تھا، پاکستانی اٹارنی جنرل
  • ☚ کشمیر میںانسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکنے کیلئے یورپی و برطانوی ارکان پارلیمنٹ کو کردار ادا کرنا ہوگا، امجد بشیر ایم ای پی
  • ☚ زلفی بخاری کا ’’اوورسیز پاکستانی سوشل کونسل ‘‘ کے قیام کا اعلان
  • ☚ بریگزٹ، تھریسامے ایم پیز سے ڈیل میں تبدیلی کیلئے مزید وقت مانگیں گی
  • ☚ حکومت نو ڈیل بریگزٹ کی صورت میں سڑکوں پر فسادات کی تیاری کررہی ہے، لارڈ باب
  • ☚ لیورپول سٹی سینٹر کے قریب فائرنگ سے 30سالہ شخص ہلاک
  • ☚ عوامی مینڈیٹ کی تکمیل حکومت کی ذمہ داری، یورپی یونین سے برطانیہ کی علیحدگی کا عمل بروقت مکمل کرلوں گی، تھریسامے
  • ☚ عوامی مینڈیٹ کی تکمیل حکومت کی ذمہ داری، یورپی یونین سے برطانیہ کی علیحدگی کا عمل بروقت مکمل کرلوں گی، تھریسامے
  • ☚ کرینہ کپور کی پریانکا چوپڑا کو ماضی نہ بھولنے کی تلقین
  • ☚ سدھو کو کپل شرما شو سے نکالنے میں سلمان خان ملوث نکلے
  • ☚ علی ظفر کی ٹوئٹ پر بھارتی آپے سے باہر ہوگئے
  • ☚ کرن جوہرکی چہیتی کہنے پرکنگنا کوعالیہ کا کرارجواب
  • ☚ فلم کے سیٹ پررنبیر کو دیکھ کر عالیہ ڈائیلاگ کیوں بھول جاتی ہیں؟ اداکارہ کا اہم انکشاف
  • ☚ آسٹریلیا سے سیریز،حارث رئوف سلیکٹرز کی نظر میں آگئے
  • ☚ سپرلیگ پاکستان کیلئے مفید، اچھے کرکٹر ملیں گے، شاہد آفریدی، ٹیلنٹ کو پرکھا جائے
  • ☚ چیئرمین احسان مانی اور ایم ڈی وسیم خان آج دبئی روانہ ہونگے
  • ☚ پاکستان ویمن کرکٹ ٹیم نے تاریخ رقم کردی
  • ☚ آئی سی سی T20 رینکنگ، پاکستان کی پہلی پوزیشن برقرار
  • آج کا اخبار

    برطانوی کابینہ کا 5 گھنٹے طویل اجلاس، بریگزٹ ڈیل کی منظوری دیدی گئی

    Published: 16-11-2018

    Cinque Terre

    لندن : بریگزٹ پر برطانوی کابینہ کے 5 گھنٹے طویل اجلاس کے بعد بریگزٹ ڈیل کی منظوری دے دی گئی، جس کے مسودے کو آئندہ ماہ برطانوی پارلیمنٹ میں منظوری کیلئے پیش کیا جائے گا۔ اس کا اعلان برطانوی وزیراعظم تھریسا مے نے کابینہ اجلاس کے بعد بدھ کی شب اپنی سرکاری رہائش گاہ 10ڈائوننگ سٹریٹ کے باہر منتظر کھڑے صحافیوں سے خطاب میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ مسودے کی منظوری میں مشکلات پیش آ سکتی ہیں تاکہ پرامید ہوں کہ وہ مشکل وقت بھی کامیابی سے نکال لیں گے۔ بدھ کو بریگزٹ منصوبے کے مخالفین اور حمایتیوں نے پارلیمنٹ بلڈنگز اور 10ڈائوننگ سٹریٹ کے باہر علیحدہ علیحدہ مظاہرے بھی کئے۔ تفصیلات کے مطابق برطانوی وزیراعظم اپنے اقتدار کیلئے خطرے کا باعث بنے بریگزٹ ڈیل میں پہلی خطرناک رکاوٹ پار کرنے میں اس وقت کامیاب ہوگئیں جب 5 گھنٹے کے طویل اجلاس کے بعد کابینہ نے انہیں بریگزٹ ڈیل کیلئے مکمل حمایت کا اظہار کرتے ہوئے ڈیل کو آگے بڑھانے کیلئے سگنل دے دیا۔ وزیراعظم نے اپنی رہائش گاہ کے بعد کہا کہ اس مسودے کیمنظوری میں انہیں پارلیمنٹ میں زیادہ شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے تاہم وہ پرامید ہیں کہ وہ اس مزاحمت کیخلاف بھی کامیاب ہوجائیں گی۔ قبل ازیں گزشتہ روز ڈیڑھ سال کے مذاکرات کے بعد طے پانے والی ڈیل کے حوالے سے اپنے پہلے کھلے تبصرے میں انہوں نے کہا تھا کہ ایک ڈرافٹ بالآخر طے پا گیا ہے، برطانیہ کی یورپی یونین سے علیحدگی کا یہ فیصلہ کم وبیش 46 سالہ رفاقت کا خاتمہ ہے، اس رفاقت کا خاتمہ عالمی مالیاتی بحران کے دوران پیدا ہونے والی غیر یقینی صورت حال اور مائیگرنٹس کے سیلاب کے خطرات کے پیش نظر کیا گیا ہے، جون 2016 میں ہونے والے ریفرنڈم میں52 فیصد برطانوی عوام نے یورپی یونین سے علیحدگی جبکہ 48 فیصد نے ساتھ رہنے کے حق میں ووٹ دیئے تھے، کابینہ سے منظوری کے بعد برطانیہ اوریورپی یونین کے درمیان حتمی معاہدے کیلئے 25 نومبر کو بریگزٹ سربراہ اجلاس ہونے کا امکان ہے۔ منگل کو بریگزٹ کے بارے میں ہونے والے اعلان کے بعد، جو یورپی یونین کی جانب سے 29 مارچ کو بغیر کسی ڈیل کے علیحدگی کے حوالے سے اقدامات شروع کئے جانے کے بعد کیا گیا تھا، پونڈ کی قدر میں تیزی سے اضافہ دیکھنے میں آیا تھا۔ ادھر مے کی جانب سے اپنے وزرا کو راضی کرنے کی کوششوں کے دوران ان کی سرکاری رہائش گاہ کے باہر ناراض بریگزٹ حمایتی اور تنقید نگار ریلیاں بھی نکال رہے ہیں۔ اخراج کیلئے لندن گروپ بنانے والی لوسی ہیرس نے اس موقع پر کہا کہ ملک کو مکمل طور پر فروخت کردیا گیا، ہم اس کے نتیجے میں یورپین یونین کی بے کار ریاست میں بدل جائیں گے۔ برطانیہ کی سب سے بڑی اپوزیشن کی پارٹی لیبر کے قائد جیرمی کوربن قبل از وقت انتخابات کا مطالبہ کر رہے ہیں، مذاکرات کے اس پور ےعمل کو شرمناک قرار دیتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت نے ایک بری ڈیل کیلئے مذاکرات میں 2 سال ضائع کردیئے اور اس ڈیل نے ملک کو منجھدار میں پھنسا دیا ہے۔ سابق وزیر اعظم ٹونی بلیئر، جو یورپی یونین کے کٹر حامی ہیں، کا کہنا ہے کہ برطانیہ برسلز میں اپنی حیثیت کھو رہا ہے اور اس کے عوض اسے کچھ نہیں ملا۔ انھوں نے کہا کہ یہ مصالحت نہیں بلکہ مشروط اطاعت کا معاہدہ ہے۔ کنزرویٹو پارٹی کے رکن پارلیمنٹ پیٹر بون نے تھریسا مے پر بریگزٹ کے حق میں ووٹ دینے والوں کو مایوس کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ انھوں نے وزیر اعظم تھریسا مے کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ آج آپ بہت سے کنزرویٹو ارکان پارلیمنٹ اور لاکھوں ووٹروں کی حمایت سے محروم ہوچکی ہیں