• ☚ رکشہ ڈرائیور کی چھٹی جماعت کی طالبہ کو اغوا کرنیکی کوشش ناکام
  • ☚ کنجاہ و لالہ موسی میں چور گینگ متحرک 3 یتیم بہنوں کا جہیز لوٹ لیا گیا
  • ☚ ملہو کھوکھر میں قتل ہونیوالے محمد شریف کا قاتل آلہ قتل سمیت گرفتار
  • ☚ سرائے عالمگیر کے گاؤں سے 15سالہ لڑکی اغوا‘ملزمان غائب
  • ☚ ٹریفک حادثات میں آڑھتی کا جوانسالہ بیٹا جاں بحق4افراد زخمی
  • ☚ چوہدری محمد الیاس کی وفات پر چوہدری سلیم اختر کا اظہار تعزیت
  • ☚ گجرات:عمرہ کیلئے جانیوالے زائرین کی واپسی کا سلسلہ جاری
  • ☚ شادی میں جانے کیلئے لی گئی لاکھوں روپے مالیت کی گاڑی ہتھیا لی گئی
  • ☚ میونسپل کا رپوریشن اندرون شہر تجاوزات کیخلاف آپریشن شروع نہ کر سکی
  • ☚ شادی میں جانے کیلئے لی گئی لاکھوں روپے مالیت کی گاڑی ہتھیا لی گئی
  • ☚ ننھی زینب کے قاتل عمران کو آج پھانسی دی جائے گی
  • ☚ کراچی میں پی ٹی آئی کے دو ارکانِ اسمبلی لڑپڑے
  • ☚ کراچی: مبینہ پولیس مقابلہ، 3 ملزمان ہلاک
  • ☚ شہری کے مرنے کے بعد بینک اکاؤنٹ کھل گئے، اربوں روپے کا لین دین
  • ☚ لاہور: نوازشریف شناختی کارڈ نہ ہونے کے باعث ووٹ نہ ڈال سکے
  • ☚ ضمنی انتخابات: پہلی بار بیرون ملک مقیم پاکستانی بھی انتخابی عمل کا حصہ بن گئے
  • ☚ کراچی میں 2 مبینہ پولیس مقابلے، اہلکار زخمی، 3 ڈکیت گرفتار
  • ☚ حکومت کی نیا پاکستان ہاوٴسنگ سکیم میں گھر کی کل قیمت اور ماہانہ قسط کتنی ہو گی؟ غریب عوام کیلئے انتہائی اچھی خبر آ گئی
  • ☚ جسٹس شوکت عزیز صدیقی عہدے سے فارغ
  • ☚ سستا گھر اسکیم کا سب سے بڑا فائدہ۔۔۔ نوکریاں ہی نوکریاں! وزیر اعظم عمران خان نے عوام کو خوشخبری سنا دی
  • ☚ آف شور دولت پر ٹیکس چوری روکنےکے یورپی یونین رولز میں لوپ ہولز کا انکشاف
  • ☚ ٹوری کی ویلفیئر سکیم سے لاکھوں افراد غربت کا شکار ہوجائیں گے،گورڈن براؤن
  • ☚ ٹومی رابنسن کے ساتھ فوجیوں کی تصویر پر آرمی نے تحقیقات شروع کر دی
  • ☚ چیف جسٹس ثاقب نثار مانچسٹر کے ڈیم فنڈ ریزنگ ایونٹ میں شرکت کرینگے
  • ☚ داعش30 ہزار جنونی دہشت گردوں کے سہاریمافیا کی شکل میں واپسی کیلئے تیار
  • ☚ سکاٹ لینڈ یارڈ نے جنید صفدراور زکریا شریف کو کلیئر کردیا
  • ☚ برطانیہ نے داعش سے تعلق رکھنے والے 9 برطانوی شہریوں کو واپس لینے سے انکار کردیا
  • ☚ پارلیمنٹری گروپ کے دورہ کشمیر سے مسئلہ اٹھانے میں مدد ملے گی، بیرسٹر عمران حسین ایم پی
  • ☚ مے کی لیبر ووٹرز سے اپیل کے ساتھ سینٹر گراؤنڈ حاصل کرنے کی کوشش
  • ☚ پاکستان سے باہر لندن میں تو کیا دنیا میں کہیں کوئی جائیداد نہیں، اسحاق ڈار
  • ☚ ساجد خان کا رویہ قابل نفرت ہے، دیا مرزا
  • ☚ فرحان سعید کی ’کراچی سے لاہور 3‘ کے ساتھ فلموں میں انٹری؟
  • ☚ خواتین کو ہراساں کرنے والوں کو اس کی قیمت بھی چکانی پڑے گی، سیف علی خان
  • ☚ گہری رنگت کی وجہ سے بچپن میں بہت تنگ کیا جاتا تھا، پریانکا چوپڑا
  • ☚ اداکارہ میرا پر شہری کے گھر پر قبضہ کا الزام
  • ☚ وہاب ریاض اور عثمان صلاح الدین کو وطن واپس بھیجنے کا فیصلہ
  • ☚ ابوظہبی ٹیسٹ کا پہلا دن ختم، آسٹریلیا کے 2 وکٹوں پر 20 رنز
  • ☚ سرفراز مچل اسٹارک کی گیند لگنے سے زخمی، میچ سے باہر ہونے کا خدشہ
  • ☚ ’ڈرا‘ نے گرین کیپس کو ڈرا دیا، سیریز داؤ پر لگ گئی
  • ☚ پی سی بی کی کرکٹ کمیٹی کیلئے وسیم اکرم اور مصباح الحق کے نام سر فہرست
  • آج کا اخبار

    عزیز بھٹی شہید ہسپتال گجرات میں انتظامات میں بہتری کی ضرورت

    Published: 01-03-2018

    Cinque Terre

    حال ہی میں عزیز بھٹی شہید ہسپتال میں ایک افسوس ناک واقعہ میڈیا کاکی توجہ کامرکزبناہے جس میں ایک خاتوں نے ہسپتال کے عملہ کے غیرذمہ دارانہ رویے اور بے حسی کی وجہ سے ہسپتال کی حدود میں ہی بچے کوجنم دیاہے ۔ رپورٹ کے مطابق خاتون کوحالت زچگی میں ہسپتال لایاگیاتھا جس کو متعلقہ شعبہ نے داخل کرنے سے معذرت کرلی تھی اورمشیت الٰہی سے خاتون کے ہاں ہسپتال کے اندر ہیبچے کی پیدائش ہوگئی ۔ اس کے بعدمیڈیاکے ذریعے ڈاکٹروں کی غفلت جب خواص وعوام کے نوٹس میں آئی تو خادم اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے بھی حسب معمول اس کانوٹس لیاپھر ہسپتال کی انتظامیہ کی کھینچاتانی بھی ہوئی اور متعلقہ خواتین ڈاکٹروں کی معطلیاں عمل آئیں ۔ انکوائری کمیٹی قائم کی گئی جس کی رپورٹ بھی آچکی ہے جس میں معطل شدہ تین خواتین ڈاکٹرز کی برطرفی کی سفارش کی گئی ہے ۔ انکوائری کمیٹی جس میں عزیز بھٹی شہید ہسپتال کے اے ایم ایس ڈاکٹر عابد ملک بطور کمیٹی کے سربراہ اور ان کے ساتھ سرجن ڈاکٹر زاہد مقصود، سنیئر ڈاکٹر اعزاز بشیر اور ڈپٹی نرسنگ سپرنٹنڈنٹ خنسہ اقبال شامل تھیں چوبیس گھنٹے میں انکوائری مکمل کر کے رپورٹ پیش کردی ہے ۔رپورٹ کے مطابق 16فروری کوجس دن یہ واقعہ پیش آیاگائنی وارڈ میں خواتین ڈاکٹرزمدیحہ اور ہماکی ڈیوٹی پر تھیں اور تیسری خاتون ڈاکٹر ڈیوٹی سے غیر حاضر تھیں۔ ڈیوٹی پر موجود دوڈاکٹرز میں سے ایک ڈیوٹی کاوقت ختم ہونے سے قبل ہی جاچکی تھیں ۔ عملہ کی طرف سے جب ڈاکٹر سے رابطہ کیاگیاتو انہوں نے ٹیلیفون پر کیس کو ریفر کرنے کی ہدایت کردی۔یہ واقعہ ہے جو اتفاق سے عام ہوگیااور اس سے ڈاکٹرز کی بے حسی، ہسپتال کے ناقص نظم و ضبط اور غریب پاکستانی شہری کی قدروقیمت اور حیثیت کاعکس سامنے آگیا مگر اس طرح کے واقعات عام ہوتے ہیں اور غریب لوگوں کے پاس صبر کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہوتا۔ایک مزدور عبدالرحمٰن ولد محمد شفیع فیکٹری میں کام کے دوران ا پنی انگلیزخمی کربیٹھا اسے ساتھی دن تقریباً بارہ بجے عزیز بھٹی شہید ہسپتال میں لے آئے ایمرجنسی میں اس کی انگلی پر پٹی باندھ کر اسے وارڈ میں بھیج دیاگیااور رات تین بجے اسے اپریشن تھیٹر لے جاکر اس کی انگلی کاٹ دی گئی جولواحقین کیلئے ایک غیر متوقع بات تھی ہسپتال کے عملہ نے جواز یہ پیش کیاکہ انگلی کالی ہوگئی تھی اور اسے کاٹنے کے سواکوئی چارہ نہ تھا۔ لواحقین یہ ماننے کیلئے تیار نہیں ہیں وہ کہتے ہیں کہ اگر بروقت علاج ہوتاتو ایسانہ کرناپڑتا۔اسی طرح بہت سے غریب مریضوں کو جنہیں فوری اپریشن کی ضرورت ہوتی ہے انہیں لمبی تاریخ دے دی جاتی ہے انہیں ٹیسٹ کرانے کیلئے بڑاانتظاکرناپڑتاہے اور اکثر باہر سے ٹیسٹ کرانے کاکہاجاتاہے۔
    صحت اور تعلیم انسانی معاشرے کی بنیادی ضرورتیں ہیں،مہذب اور ترقی یافتہ معاشروں اور فلاحی ریاستوں میں ان دو شعبوں کوبہت اہمیت حاصل ہوتی ہے چونکہ کسی ملک کی تعمیروترقی، دفاع اور شہریوں میں شعور بیدارکرنے اورمعاشرے سے غربت اور پسماندگی دور کرنے کیلئے صحت اورتعلیم کاکلیدی کردار ہوتاہے اور ان بنیادی سہولتوں کابہم پہنچانا ریاست کی اولین ذمہ داری خیال کی جاتی ہے ۔ مذکورہ بالاسہولتیں شہریو ں میں حب الوطنی پیداکرنے، جرائم کی روک تھام ، ملکی قوانین کااحترام اور ملک میں معاشی، معاشرتی وسیاسی استحکام لانے کیلئے ضروری ہیں اوران تک ہر کسی کی رسائی کوممکن بنانا بھی ضروری ہے ۔ ہمارے ہاں سرکاری ہسپتال آبادی کے تناسب سے ناکافی ہیں ان میں ضروت کے مطابق سہولتیں میسر نہیں ہیں اور ان میں مریضوں کااتنا رش ہوتاہے کہ بسااوقات علاج معالجے کی صحیح سروس عملہ کیلئے مہیاکرنا ناممکن بھی ہوتا ہے اور انتظامی مسائل بھی پیداہوتے ہیں ۔ اگرچہ ہمارے ہاں اب نہ ڈاکٹرز کی کمی ہے اور نہ ہی پیرمیڈیکل سٹاف کی لیکن ارباب اختیار کیلئے ایک انتظامی چیلنج ضرور ہے۔عزیز بھٹی شہید ہسپتال میں انجمن بہبود مریضاں کی بہت مدد حاصل ہے وہ غریب مریضوں کو دوائیاں بھی مفت فراہم کررہی ہے اور ہسپتال کی دوسری ضرورتیں بھی پوری کرتی ہے۔ لیکن مسائل پھر بھی ہیں ۔ اچھے ہسپتال اور سہولتیں بھی عوام کو مطمئن نہیں کر سکتیں جب تک کہ ڈاکٹرز اور دیگر سٹاف احساس ذمہ داری کے ساتھ کام نہ کرے۔ سرکاری شعبہ میں نئے ہسپتالوں کاقیام اور ہسپتالوں میں نظم و ضبط کو بہتر بنانے کی اشد ضرورت ہے۔ جرائم کی روک تھام کیلئے کئی طرح کے نئے محکمے وجود میں آچکے ہیں جن پر کروڑوں ، اربوں روپے خرچ آتاہے لیکن جرائم کے بنیادی اسباب پر کم ہی توجہ دی جاتی ہے۔ سرکاری شعبہ کے ہسپتالوں اور تعلیمی اداروں کی ناقص کارکردگی نے غریب عوام کو نجی شعبہ کامرہون منت کردیاہواہے جس کی سہولتوں سے عام طور پر محض خوشحال لوگ ہی استفادہ کر سکتے ہیں۔ارباب اختیار ہسپتال کے مسائل اور ڈاکٹروں میں احساس ذمہ داری پیداکرنے کیلئے اقدامات کریں تاکہ آئندہ کسی بچے کی پیدائش ہسپتال کی انتظارگاہ یاباہرپڑے بنچوں پر نہ ہو۔