• ☚ ماضی میں حکومتیں معاشی حب کراچی کو نظرانداز کرتی رہیں، وزیراعظم
  • ☚ اپوزیشن کے تیار ہوتے ہی حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد لے آئیں گے، بلاول
  • ☚ پی ڈی ایم کا پیپلز پارٹی اور اے این پی کے ساتھ مل کر بجٹ کی مخالفت کا فیصلہ
  • ☚ حکومت نے بجلی 1 روپے 72 پیسے فی یونٹ مہنگی کردی
  • ☚ 9 ماہ کے دوران بیرونی قرضوں میں 7 ارب41 کروڑ 30 لاکھ ڈالر سے زائد کا اضافہ
  • ☚ پاکستان نے پہلے ٹی ٹوئنٹی میں جنوبی افریقا کو شکست دیدی
  • ☚ حکومت نے ملک بھر میں جلسے جلوس پر پابندی عائد کردی
  • ☚ آئی ایم ایف کا بجلی، گیس اور یوٹیلیٹی اسٹورز پر سبسڈیز ختم کرنے کا مطالبہ
  • ☚ وزیراعظم نے گستاخانہ خاکوں کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھادیا، اسلامو فوبیا کیخلاف یوم منانے کا مطالبہ
  • ☚ پیپلزپارٹی نے زیادتی کیس کے مجرم کو سرعام پھانسی دینے کی مخالفت کردی
  • ☚ ’’پینڈورا پیپرز‘‘ سامنے آگئے، 700 پاکستانیوں کی آف شور کمپنیاں نکل آئیں
  • ☚ شمالی وزیرستان میں فورسز کی گاڑی پر حملہ، 5 اہل کار شہید
  • ☚ کورونا وبا؛ مزید 33 افراد جاں بحق، ایک ہزار سے زائد مثبت کیسز رپورٹ
  • ☚ افغانستان میں امن کیلیے عالمی برادری کی امداد ضروری ہے، آرمی چیف
  • ☚ طالبان نے افغانستان میں نئی حکومت کی تشکیل کا اعلان کردیا
  • ☚ سید علی گیلانی سری نگر میں سپرد خاک، بھارت نے وادی میں غیر اعلانیہ کرفیو لگادیا
  • ☚ 90 کی دہائی کی صورتحال سے بچنے کیلئے افغانستان کو تنہا نہ چھوڑا جائے، وزیرخارجہ
  • ☚ ادویات کی قیمتوں میں 150 فیصد تک اضافہ کردیا گیا
  • ☚ اسرائیل کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم نہیں کریں گے:شہزادہ فیصل بن فرحان
  • ☚ طبی عملہ بھی ڈیلٹا ویرینٹ کی لپیٹ میں آگیا، سول اسپتال میں سرجریز ملتوی
  • ☚ اسلام پسندی سے مغرب کو اب بھی خطرہ موجود ہے، سابق برطانوی وزیراعظم
  • ☚ افغانستان کے نئے وزیراعظم ملا حسن اخوند کی زندگی پر ایک نظر
  • ☚ ایران پر حملے کے پلان پر تیزی سے کام جاری ہے، اسرائیلی آرمی چیف
  • ☚ کرونا لاک ڈاؤن، بے گھر افراد کی مدد کے لیے اٹلی کے شہریوں کی زبردست کاوش
  • ☚ ایران میں کورونا وائرس سے خاتون رکنِ اسمبلی ہلاک
  • ☚ کورونا وائرس کے متاثرین 1لاکھ 8 ہزار ہوگئے، اٹلی میں 24 گھنٹوں کے دوران 133ہلاکتیں
  • ☚ دبئی کے حکمراں اہلیہ کو دھمکیاں دینے اور بیٹیوں کے اغوا کے مرتکب ہوئے، برطانوی عدالت
  • ☚ ترکی اور روس کا شام میں جنگ بندی پر اتفاق
  • ☚ تیونس میں امریکی سفارت خانے پر خود کش حملہ
  • ☚ کورونا وائرس؛ سعودی شہریوں کے عمرہ ادائیگی پر بھی پابندی
  • ☚ عالیہ بھٹ کی شوٹنگ کے دوران طبیعت خراب، اسپتال منتقل
  • ☚ عالیہ بھٹ کی شوٹنگ کے دوران طبیعت خراب، اسپتال منتقل
  • ☚ حریم شاہ کی لیک ویڈیو نے مفتی قوی کا اصل چہرہ بے نقاب کردیا
  • ☚ "ارطغرل غازی" کے اداکار کا طیارہ حادثے پر اظہار افسوس
  • ☚ کورونا وائرس؛ فنکاروں کی حکومت سے غریب طبقے کا خیال رکھنے کی درخواست
  • ☚ سری لنکا ٹیم حملے میں زخمی ہونے والے احسن رضا کا بطور ٹیسٹ امپائر ڈیبیو
  • ☚ محمد عامر کی قومی ٹیم میں واپسی کیلیے مشروط رضامندی
  • ☚ پی ایس ایل کا چھٹا ایڈیشن تماشائیوں کی موجودگی میں ہونے کا امکان
  • ☚ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نے پب جی گیم پر پابندی ختم کردی
  • ☚ روزانہ 22 گھنٹے گیم کھیلنے سے نوجوان کا بازو اور ہاتھ مفلوج
  • آج کا اخبار

    نواز شریف کو پاکستانی سیاست سے کوئی نہیں نکال سکتا،یہ باب بند ہوگیا،پاکستانی کمیونٹی

    Published: 09-07-2018

    Cinque Terre

    لوٹن:برطانیہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی شخصیات نے احتساب عدالت کی جانب سے سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد محمد نوازشریف کو دی گئی سزا پر مختلف آرا کا اظہار کیا ہے۔ لوٹن میں مقیم پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی سے جنگ سروے کے دوران جب میاں نوازشریف کو سزا ہوجانے کے بعد پاکستان کی سیاست میں نوازشریف کے کردار کے بارے میں پوچھا گیا تو ملا جلا رحجان پایا گیا۔ راجہ زاروب خان پاکستان مسلم لیگ (ن) لوٹن کے صدر نے اس فیصلے کے پاکستان کی سیاست پر انتہائی منفی اثرات پڑنے کا خدشہ ظاہر کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کو وزارت، صدارت یا کسی عہدے سے ہٹانے سے فرق نہیں پڑتا۔ میاں نواز شریف عوام کے دلوں میں رہتے ہیں اس لئے انہیں پاکستان کی سیاست سے نہیں نکالا جاسکتا اور ایسا سوچنے والے خوابوں کی دنیا میں رہتے ہیں۔ میاں نواز شریف اور پاکستان ایک دوسرے کے لئے لازم و ملزوم ہیں پاکستان تحریک انصاف لوٹن کے حافظ طارق کے مطابق میاں نواز شریف اور ان کے خاندان نے کرپشن کی اور اس کی سزاعدالتوں نے دی اب ن لیگ یا نواز شریف کا مقدر صرف جیل ہے۔ اپنی ناجائز کمائی کو بچانے کے لئے میاں نواز شریف سیاست کی آڑ میں چھپ رہے ہیں۔عام انتخابات میں عوام واضح کردیں گے کہ کون پاکستان کا ہمدرد ہے اور کس کو صرف اپنی دولت سے غرض ہے۔ میاں نواز شریف اور ان کی (ن) لیگ 25جولائی کے بعد ڈھونڈنے کو نہیں ملے گی۔ عبدالغفور میاں نواز شریف کو سزا دینا ایک سازش قرار دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف اگر جیل جاتے ہیں تو اس سے ان کے چاہنے والوں میں اضافہ ہوگا اور یقیناً مسلم لیگ (ن) کو ہمدردی کا ووٹ بھی ملے گا۔ یوں میاں نواز شریف نیلسن منڈیلا کا کردار ادا کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ میاں نواز شریف اس سے قبل قید اور جیل کو دیکھ چکے ہیں۔صفدر بخاری اس فیصلے کو تاریخی کہتے ہیں کہ پاکستان میں اس سے قبل سزائیں صرف کمزوروں کے لئے تھیں اس فیصلے سے پاکستان میں عدالتیں آزاد ہوگئی ہیں۔ طاقتور اور کمزور ہر ایک کے لئے ایک جیسا قانون ہو تو معاشرہ ترقی کرتا ہے۔ میاں نواز شریف اپنی جائیدادوں کی تفصیل دینے میں ناکامرہے تو انہیں سزا دی گئی۔اب پاکستان ایک نئی سمت کی طرف بڑھے گا۔ میاں نواز شریف کے جیل جانے سے طاقتور اور کرپٹ عناصر کو ایک سخت پیغام گیا ہے جس سے اب کوئی بھی کرپشن کرنے سے پہلے سوچے گا۔ میاں نواز شریف جس طرح نیلسن منڈیلا یا بھٹو بننے کا خواب دیکھ رہے ہیں ایسا کچھ نہیں ہونے والا بلکہ ن لیگ کا وجود خطرے میں لگ رہا ہے۔ عمران یوسف کا کہنا ہے کہ میاں نواز شریف نے تین بار وزارت عظمیٰ کا عہدے پاس رکھنے کے باوجود عوام کے لئے کچھ ایسا نہیں کیا جو انہیں لوگ یاد رکھیں۔ انہوں نے صرف اپنے بنک بیلنس کا خیال رکھا اور وہی اب ان کی رسوائی کا سبب بن رہا ہے۔ میاں نواز شریف کا نہ صرف سیاست سے باب ختم ہوچکا ہے بلکہ نشان عبرت بن جائے گا۔ اب عوام الیکشن میں اپنے درست نمائندے کا چناؤ کریں تاکہ پاکستان کی ترقی کا درست سمت میں تعین ہوسکے۔ بیڈ فورڈ سے کونسلر محمد نواز نے کہا کہ جس طرح نواز شریف کی فیملی کے خلاف فیصلہ آیا ہے انہیں اب واپس سیاست میں نہیں آنا چاہئے۔ وہ لوگ جو پہلے حکومت کر چکے ہیں اور آزمائے جا چکے ہیں ان کی جگہ اب وہ لوگ جن کا مقصد خالصتاً پاکستان اور عوام کی خدمت کرناہو ان کو موقع دیا جانا چاہئے۔ انھوں نے مزید کہا کہ خواہ وہ عمران خان ہو ںیا جو کوئی بھی ہو پاکستان اور پاکستان کے عوام کے مفاد میں کام کرے ملک کو گرداب سے نکال کر کامیابی کی طرف لے جائے۔ راجہ امجد فاروق ایڈووکیٹ نے کہا کہ نواز شریف اوران کی فیملی کے خلاف اس قسم کے فیصلے سے وہ نہیں سمجھتے کہ انکی سیاست ختم ہو گئی ہے۔ ابھی ایک فیصلہ آنا باقی ہے وہ ہے عوام کا فیصلہ ہے۔ پاکستان کو اسوقت ایک مضبوط جمہو ریت کی ضرورت ہے تاکہ ملک پروان چڑھ سکے۔ محمد عثمان نیایک سوال کے جواب کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ اس فیصلہ سے نواز شریف کی سیاست کو اتنا زیادہ نقصان نہیں ہو گا۔ وقت کے ساتھ ساتھ حالات بھی تبدیل ہوتے رہتے ہیں ماضی میں بھی نواز شریف کی سیاست پر پابندی لگائی گئی تھی لیکن وہ دوبارہ سیاست میں آنے میں کامیاب ہو گئے تھے۔ مختار چوہدری نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ میاں برادران کا اب سیاست میں کوئی اچھا مستقبل ہو گا۔ خاص کر اس فیصلہ کے بعد نواز شریف کی سیاست ختم ہو کر رہ جائے گی۔ انھوں مزید نے کہا کہ پاکستان میں جتنے بھی کرپٹ لوگ ہیں خواہ ان کا تعلق کسی بھی جماعت سے ہو سب پر اسی طرح مقدمات چلا کر سزا دینی چاہئے تا کہ آئندہ آنے والے سیاستدان ملک و قوم کو لوٹنے کی بجائے ملک و قوم کی بقا کے لیے کام کریں۔