• ☚ ماضی میں حکومتیں معاشی حب کراچی کو نظرانداز کرتی رہیں، وزیراعظم
  • ☚ اپوزیشن کے تیار ہوتے ہی حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد لے آئیں گے، بلاول
  • ☚ پی ڈی ایم کا پیپلز پارٹی اور اے این پی کے ساتھ مل کر بجٹ کی مخالفت کا فیصلہ
  • ☚ حکومت نے بجلی 1 روپے 72 پیسے فی یونٹ مہنگی کردی
  • ☚ 9 ماہ کے دوران بیرونی قرضوں میں 7 ارب41 کروڑ 30 لاکھ ڈالر سے زائد کا اضافہ
  • ☚ پاکستان نے پہلے ٹی ٹوئنٹی میں جنوبی افریقا کو شکست دیدی
  • ☚ حکومت نے ملک بھر میں جلسے جلوس پر پابندی عائد کردی
  • ☚ آئی ایم ایف کا بجلی، گیس اور یوٹیلیٹی اسٹورز پر سبسڈیز ختم کرنے کا مطالبہ
  • ☚ وزیراعظم نے گستاخانہ خاکوں کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھادیا، اسلامو فوبیا کیخلاف یوم منانے کا مطالبہ
  • ☚ پیپلزپارٹی نے زیادتی کیس کے مجرم کو سرعام پھانسی دینے کی مخالفت کردی
  • ☚ ملک ریاض کی آصف زرداری کو عمران خان کا مفاہمت کا پیغام پہنچانے کی مبینہ آڈیو سامنے آگئی
  • ☚ سمندر پار پاکستانی ’امپورٹڈ حکومت‘ کے خلاف مظاہرے اور سوشل میڈیا پر مہم چلائیں، عمران خان
  • ☚ پشاور قصہ خوانی بازار کی مسجد میں نماز جمعہ کے دوران خودکش حملہ، 57 افراد شہید
  • ☚ حکومت کا ملک میں بھارت اور بنگلا دیش سے زیادہ مہنگائی کا اعتراف
  • ☚ وزیر خارجہ کا ڈی جی آئی ایس آئی کے ہمراہ کابل کا اہم دورہ
  • ☚ ’’پینڈورا پیپرز‘‘ سامنے آگئے، 700 پاکستانیوں کی آف شور کمپنیاں نکل آئیں
  • ☚ شمالی وزیرستان میں فورسز کی گاڑی پر حملہ، 5 اہل کار شہید
  • ☚ کورونا وبا؛ مزید 33 افراد جاں بحق، ایک ہزار سے زائد مثبت کیسز رپورٹ
  • ☚ افغانستان میں امن کیلیے عالمی برادری کی امداد ضروری ہے، آرمی چیف
  • ☚ طالبان نے افغانستان میں نئی حکومت کی تشکیل کا اعلان کردیا
  • ☚ اسلام پسندی سے مغرب کو اب بھی خطرہ موجود ہے، سابق برطانوی وزیراعظم
  • ☚ افغانستان کے نئے وزیراعظم ملا حسن اخوند کی زندگی پر ایک نظر
  • ☚ ایران پر حملے کے پلان پر تیزی سے کام جاری ہے، اسرائیلی آرمی چیف
  • ☚ کرونا لاک ڈاؤن، بے گھر افراد کی مدد کے لیے اٹلی کے شہریوں کی زبردست کاوش
  • ☚ ایران میں کورونا وائرس سے خاتون رکنِ اسمبلی ہلاک
  • ☚ کورونا وائرس کے متاثرین 1لاکھ 8 ہزار ہوگئے، اٹلی میں 24 گھنٹوں کے دوران 133ہلاکتیں
  • ☚ دبئی کے حکمراں اہلیہ کو دھمکیاں دینے اور بیٹیوں کے اغوا کے مرتکب ہوئے، برطانوی عدالت
  • ☚ ترکی اور روس کا شام میں جنگ بندی پر اتفاق
  • ☚ تیونس میں امریکی سفارت خانے پر خود کش حملہ
  • ☚ کورونا وائرس؛ سعودی شہریوں کے عمرہ ادائیگی پر بھی پابندی
  • ☚ عالیہ بھٹ کی شوٹنگ کے دوران طبیعت خراب، اسپتال منتقل
  • ☚ عالیہ بھٹ کی شوٹنگ کے دوران طبیعت خراب، اسپتال منتقل
  • ☚ حریم شاہ کی لیک ویڈیو نے مفتی قوی کا اصل چہرہ بے نقاب کردیا
  • ☚ "ارطغرل غازی" کے اداکار کا طیارہ حادثے پر اظہار افسوس
  • ☚ کورونا وائرس؛ فنکاروں کی حکومت سے غریب طبقے کا خیال رکھنے کی درخواست
  • ☚ سری لنکا ٹیم حملے میں زخمی ہونے والے احسن رضا کا بطور ٹیسٹ امپائر ڈیبیو
  • ☚ محمد عامر کی قومی ٹیم میں واپسی کیلیے مشروط رضامندی
  • ☚ پی ایس ایل کا چھٹا ایڈیشن تماشائیوں کی موجودگی میں ہونے کا امکان
  • ☚ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نے پب جی گیم پر پابندی ختم کردی
  • ☚ روزانہ 22 گھنٹے گیم کھیلنے سے نوجوان کا بازو اور ہاتھ مفلوج
  • آج کا اخبار

    نفیس زکریا مقبوضہ کشمیر پر برطانیہ میں عوامی آرا متحرک کر رہے ہیں

    Published: 10-02-2020

    Cinque Terre

    لندن : ہاکستان ہائی کمیشن کی جانب سے 5 فروری کو منعقدہ ایک سیمینار واضح طور پر اس امر کا اظہار تھا کہ مسئلہ کشمیر پربرطانیہ میں اہم سپورٹ مل رہی ہے جبکہ عوامی دلچسپی میں اضافہ ہو رہا ہے۔ برٹش پارلیمنٹ کے ارکان، معروف دانشور، قانونی ماہرین، سول سوسائٹی کے ارکان اور برٹش کشمیری بھی جبر کی شکار کشمیری قوم سے اپنی سپورٹ کے اظہار کیلئے سیمینار میں موجود تھے۔ ہائی کمشنر نفیس زکریا کشمیریوں کیلئے حمایت کے حصول اور انسانی بحران کے بارے میں آگہی پیدا کرنے کیلئے برطانیہ کی سیاسی لیڈرشپ اور سوسائٹی کے مختلف طبقات سے فعال طور پر رابطے کر رہے ہیں۔ واضح رہے کہ کشمیری 5 اگست 2019 سے محصور ہیں جب مودی حکومت نے یکطرفہ طور پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں منظور شدہ قراردادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غیرقانونی اقدام کے ذریعے متنازع کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کی۔ سیمینار کے شرکا انڈیا کے زیر قبضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورت حال پر اپنے جائزوں کی بنیاد پر تیار کی گئی ایک ’’نتیجہ خیز

    دستاویز‘‘ اپنے ہمراہ لے کر گئے۔ انہوں نے مقبوضہ علاقے میں انسانی حقوق کی تکلیف دہ خلاف ورزیوں، تنازع حل کرنے کیلئے اقوام متحدہ کے غیر متحرک ہونے، بالخصوص قتل عام، اجتماعی زیادتی، اجتماعی طور پر بینائی سے محروم کرنے اور زبردستی لاپتہ کردینے کو تشویش کے ساتھ نوٹ کیا۔ 5 اگست سے 8 ملین کشمیریوں کے محاصرے، کمیونیکیشن بلیک آئوٹ اور میڈیا بشمول انتظامی حقوق کی تنظیموں تک رسائی نہ دے کر بیرونی دنیا سے ان کے رابطے منقطع کئے جانے پر گہری تشویش کا اظہار کیاگیا۔ شرکا نے فوری اور غیر مشروط طور پر محاصرہ ختم کرنے اور 5 اگست 2019 کے یکطرفہ اقدامات کو فوری اور غیر مشروط طور پر واپس لینے، فیکٹ فائنڈنگ مشنز کو رسائی دینے، بین الاقوامی برادری کی فوری مداخلت کے ذریعے جموں و کشمیر میں فوجی موجودگی میں کمی، ظالمانہ قوانین اور علاقے میں کشیدگی کے خاتمے کیلئے فوری اقدامات اور ترجیحی طور پر سلامتی کونسل کی منظور شدہ قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر حل کرنے کا مطالبہ کیا۔ تنازع کشمیر پر ایک متفقہ نتیجہ خیز دستاویز کی تیاری کو ہائی کمشنر کی ٹھوس کامیابی قرار دیا گیا ہے۔ مسٹر زکریا جنوری 2019 میں لندن میں ہائی کمشنر کی حیثیت سے تعینات ہوئے تھے، انہوں نے جس پہلے ایونٹ میں شرکت کی، وہ برطانوی پارلیمنٹ میں منعقدہ یوم یکجہتی کشمیر تھا، جس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ اس وقت سے ہی ہائی کمشنربھارتی جبر وستم کا نشانہ بننے والے متاثرہ کشمیریوں کی حالت زار پر روشنی ڈالنے کیلئے بڑی تعداد میں گفتگو کیلئے اجلاس، تصاویری نمائشوں کا انعقاد کرتے رہے ہیں۔ مسئلہ کشمیر لاتعداد مرتبہ برطانوی پارلیمنٹ میں بھی زیر بحث لایا گیا۔ مسٹر زکریا برطانوی ٹیلی ویژنز پر اپنے انٹرویوز کے ذریعے بھی عوام سے رابطے کر رہے ہیں۔ بہت سے دیگر طریقوں اور موثرمنفرد اقدامات کے ذریعے وہ کشمیر کے معاملہ پر عوامی رائے متحرک کر رہے ہیں۔ ایک ترجمان کی حیثیت سے بھی انہوں نے کشمیر کیلئے موثر کمپین چلائی اور اسے اپنی ہفتہ وار بریفنگ کا لازمی عنصر بنا دیا ہے۔